مدارس، دہشت گردوں کی پناہ گاہیں، یوپی وزیر کی زہر افشانی

یوپی کے وزیر رگھو راج سنگھ نے کہا کہ کیرالا میں اسلام ازم چلایا جارہا ہے اور وہاں ہندو بیٹیوں کو اذیت رسانی کی جارہی ہے۔ وہاں ایسا اس لئے ہورہا ہے کیونکہ وہاں کمیونسٹ حکومت قائم ہے۔

لکھنؤ: اترپردیش کے وزیر رگھوراج سنگھ نے کہا ہے کہ مدرسے دہشت گردوں کی پناہ گاہیں ہیں جہاں ان کی تربیت کی جاتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر انہیں موقع ملے تو وہ ملک کے تمام مدارس کو بند کردیں گے کیونکہ مدرسہ سے نکلنے والا شخص دہشت گرد بن جاتا ہے۔ رگھوراج سنگھ نے نامہ نگاروں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ اگر دہشت گردی کے چہرہ کو کچلا جانا ہے اور اس سانپ کو ختم کرنا ہے تو ہم دہشت گردی کو ویسے ہی کچل دیں گے جیسے سانپ کا پھن کچلا جاتا ہے۔

 انہوں نے کہا کہ قبل ازیں اترپردیش میں 250 مدارس تھے اور آج زائداز 22ہزار مدرسے قائم ہوچکے ہیں۔ دہشت گرد منان وانی کا حوالہ دیتے ہوئے جو علی گڑھ مسلم یونیورسٹی(اے ایم یو) کا طالب علم تھا‘ انہوں نے کہا کہ وہ یہاں زیرتعلیم دہشت گرد تھا۔ مدرسوں میں زیرتعلیم تمام افراد آئی ایس آئی کے ایجنٹ ہیں۔

 سنگھ نے مزید کہا کہ کیرالا میں اسلام ازم چلایا جارہا ہے اور وہاں ہندو بیٹیوں کو اذیت رسانی کی جارہی ہے۔ وہاں ایسا اس لئے ہورہا ہے کیونکہ وہاں کمیونسٹ حکومت قائم ہے۔ ملک میں دہشت گردی کے خاتمہ کے لئے حکومت کو چاہئے کہ وہ ان مدرسوں کو تباہ کرے۔ انہوں نے حکومت سے درخواست کی کہ کیرالا حکومت کو تحلیل کردیا جائے اور وہاں فوری صدر راج نافذ کردیا جائے۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.