مسلمانوں نے گردوارہ میں خودنمازِ جمعہ ادا نہیں کی

گردوارہ کمیٹی نے ایک بیان میں کہا کہ مسلمانوں نے گروپورب تقاریب کی وجہ سے کسی بھی تنازعہ سے بچنے کیلئے خودنماز جمعہ ادا کرنے سے انکار کیا۔ کمیٹی نے کہا کہ اس ضمن میں آئندہ ہفتہ ایک حتمی فیصلہ کیاجائے گا۔

گرگاؤں: گرگاؤں کی گردوارہ سنگھ سبھا کمیٹی کے اس اعلان کے ایک دن بعد کہ وہ اس کے احاطہ میں مسلمانوں کے نماز جمعہ ادا کرنے کیلئے اپنے دروازے کھول رہی ہے، ملینیم شہر میں مسلمانوں نے کسی بھی گردوارہ میں نمازجمعہ ادا نہیں کی۔ گردوارہ کمیٹی نے ایک بیان میں کہا کہ مسلمانوں نے گروپورب تقاریب کی وجہ سے کسی بھی تنازعہ سے بچنے کیلئے خودنماز جمعہ ادا کرنے سے انکار کیا۔ کمیٹی نے کہا کہ اس ضمن میں آئندہ ہفتہ ایک حتمی فیصلہ کیاجائے گا۔

گردوارہ مینجمنٹ کمیٹی کے ترجمان دایاسنگھ نے اس مسئلہ پر بات کرتے ہوئے کہا کہ کمیٹی نے فیصلہ کیاتھا کہ اگر مسلمانوں کو مشکلات کا سامنا ہوتو نماز کے لئے جگہ کی پیشکش کی جائے۔ ہم یہاں انہیں نمازادا کرنے کی اجازت دیں گے۔ مسلمانوں نے گروپورب کی وجہ سے کسی نزاع سے بچنے کیلئے خودنماز ادا کرنے سے انکار کیا۔ ہم‘ نماز کے مسئلہ پر آئندہ ہفتہ حتمی فیصلہ کریں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ عوامی یا کھلی جگہ پر نماز ادا کرنے میں مسئلہ کیا ہے، جب ہم کنوریاترا یا ناگرکرتان نکال سکتے ہیں۔

مسلمانوں نے 1984 کے فسادات میں ہزاروں سکھوں کی جانیں بچاکر بھائی چارہ کا پیام دیاتھا۔ دریں اثناء ایک مقامی ساکن نے نماز ادا کرنے کے لئے اپنی زمین کی پیشکش کی ہے۔ قبل ازیں گروگرام میں صدربازار کی گردوارہ اسوسی ایشن نے عوامی اور کھلی جگہ پر نماز ادا کرنے پر اعتراضات کے بعد 18نومبر کو نماز جمعہ کیلئے اپنے احاطہ میں جگہ دینے کی پیشکش کی تھی۔

گروگرام(گرگاؤں) انتظامیہ نے 37 منتخبہ مقامات میں سے 8 پر نماز ادا کرنے کی اجازت سے دستبرداری اختیار کرلی تھی۔ ضلع انتظامیہ کے ایک سرکاری بیان کے مطابق مقامی افراد اور ریسڈنٹ ویلفیراسوسی ایشن کے اعتراض پر اجازت منسوخ کی گئی تھی۔

ذریعہ
منصف ویب ڈیسک

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.