ملک گیر احتجاج کرنے راکیش ٹکیت کا انتباہ

انہوں نے خبردار کیا کہ حکومت نے کسانوں کے ساتھ طئے پایا معاہدہ ایک ہفتہ میں روبہ عمل نہ لایا تو ملک گیر احتجاج کیا جائے گا۔ 4 اکتوبر کو راکیش ٹکیت کی ثالثی سے معاہدہ ہوا تھا۔

لکھیم پور کھیری(یوپی): بی کے یو قائد راکیش ٹکیت نے چہارشنبہ کے دن مرکزی وزیر اجئے مشرا کے استعفیٰ اور لکھیم پور کھیری واقعہ کے تمام ملزمین کی گرفتاری کا مطالبہ کیا۔

انہوں نے خبردار کیا کہ حکومت نے کسانوں کے ساتھ طئے پایا معاہدہ ایک ہفتہ میں روبہ عمل نہ لایا تو ملک گیر احتجاج کیا جائے گا۔ 4 اکتوبر کو راکیش ٹکیت کی ثالثی سے معاہدہ ہوا تھا۔

ایڈیشنل ڈائرکٹر جنرل پولیس پرشانت کمار نے ٹکیت کی موجودگی میں حکومت کے فیصلہ کی جانکاری دی تھی کہ ہر مہلوک کسان کے ورثا کو 45لاکھ روپے ملیں گے اور ہائی کورٹ کے موظف جج کے ذریعہ عدالتی تحقیقات کرائی جائیں گی۔

راکیش ٹکیت نے لکھیم پور سٹی کے گردوارہ میں چہارشنبہ کے دن میڈیا سے بات چیت میں کہا کہ ہمارا احتجاج ختم نہیں ہوا ہے۔ ہم 8 دن انتظار کریں گے۔ مطالبات پورے نہ ہوئے تو ملک گیر احتجاج شروع کردیں گے۔

سمیکت کسان مورچہ قائد پیر کی صبح ہی تکونیہ گاؤں پہنچ گئے تھے جہاں ایک اسپورٹس یوٹیلٹی وہیکل (ایس یو وی) نے 4 کسانوں کو روند ڈالا تھا۔ 4 کسانوں کے علاوہ بی جے پی کے 2 ورکرس‘ وزیر کے ڈرائیور اور ایک مقامی صحافی کی جان گئی تھی۔

بھارتیہ کسان یونین نے بھی مرکزی وزیر کے لڑکے آشیش مشرا عرف مونو مشرا کی گرفتاری کا مطالبہ کیا۔ اس نے کہا کہ آشیش مشرا کو فوری گرفتار کیا جائے۔ 7 دن میں ہمارا مطالبہ پورا نہ ہوا تو بی کے یو اترپردیش بھر میں احتجاج کرے گی۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.