نئی پارٹی بنانے کا عمل تیزی سے جاری ہے: امریندرسنگھ

کیپٹن سنگھ نے کہا کہ جو لوگ ان پر الزام لگا رہے ہیں کہ وہ بی جے پی لیڈروں سے ملنے اور نئے انتخابی حالات کے ساتھ دہلی گئے تھے۔

چندی گڑھ: پنجاب کے سابق چیف منسٹر کیپٹن امریندر سنگھ نے آج کہا کہ وہ اپنی پارٹی بنانے جا رہے ہیں جس پر کام جاری ہے اور نام طے ہونے کے بعد ہی اس کا انکشاف کیا جائے گا۔

چیف منسٹر کے عہدہ سے استعفیٰ دینے کے بعد پہلی بار صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیپٹن سنگھ نے کہا کہ ان کی نئی پارٹی بنانے کا عمل جاری ہے اور انتخابی نشان کے نام اور نشان کے بارے میں الیکشن کمیشن کو درخواست دے دی ہے۔ جیسے ہی پارٹی کا نام اور انتخابی نشان طے ہوجاتا ہے‘ ویسے ہیں ان کا اعلان کر دیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ پارٹی چھوٹی اور بڑی پارٹیوں کے ساتھ انتخابی اتحاد بنائے گی جن میں اکالی دل سے الگ ہونے والے دھڑ بھی شامل ہیں اور تمام 117 سیٹوں پر امیدوار کھڑے کریں گے۔ اکالی دل کے سابق جنرل سکریٹری سکھدیو سنگھ ڈھینڈسہ، سابق اکالی رکن پارلیمنٹ رنجیت سنگھ برہمپورہ، روی اندر سنگھ جیسے بڑے رہنماؤں کے ساتھ تال میل کریں گے اور ہم ان کی حمایت کریں گے اور وہ انتخابات میں ہمارے امیدواروں کی حمایت کریں گے۔

انہوں نے واضح کیا کہ وہ اسی مقصد ، ہدف اور پنجاب کے مفاد کے مسائل کے ساتھ الیکشن لڑیں گے جن کی بنیاد پر انہوں نے 2017 کے انتخابات میں کانگریس کو اقتدار تک پہنچایا تھا۔ یہ الگ بات ہے کہ زمانہ بدل گیا ہے۔ کل وہ کانگریس میں تھے، آج ایک نئی پارٹی، ایک نئے رنگ کے ساتھ عوام کے درمیان جائیں گے۔ انہوں نے ہمیشہ پنجاب اور ریاست کے عوام کے مفاد کے لیے کام کیا اور کرتے رہیں گے۔

کیپٹن سنگھ نے کہا کہ جو لوگ ان پر الزام لگا رہے ہیں کہ وہ بی جے پی لیڈروں سے ملنے اور نئے انتخابی حالات کے ساتھ دہلی گئے تھے، لیکن یہ لوگ یہ بھی نہیں جانتے کہ مرکز اور ریاست کے درمیان تال میل کے بغیر ترقی ممکن نہیں ہے۔

وہ ہمیشہ مرکزی وزیر داخلہ امیت شاہ سے پنجاب کے مفادات کے حوالے سے ملے، پنجاب کے کسانوں کی تعمیر و ترقی کے بارے میں بات کی اور کل بھی وہ زراعت سے متعلق کچھ لوگوں کے ساتھ دہلی جا رہے ہیں اور کسانوں کے مسئلے کو حل کرنے کے لیے ان سے ملاقات کریں گے۔ ویسے بھی کسانوں کا مسئلہ مرکز اور کسانوں کا معاملہ ہے کیونکہ کسانوں نے پہلے ہی اعلان کر دیا تھا کہ ان کے معاملے میں کوئی بھی سیاستدان نہیں آئے گا۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.