نوئیڈا انٹرنیشنل ایرپورٹ کا مودی کے ہاتھوں سنگ بنیاد

مودی نے دہلی سے متصل ریاست کے ضلع گوتم بدھ نگر کے جیور میں نوئیڈا انٹرنیشنل ایر پورٹ کا سنگ بنیاد رکھنے کے بعد ایک بڑی عوامی ریالی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 21ویں صدی کا نیا ہندوستان آج ایک سے بڑھ کر ایک بہترین جدید ڈھانچے تیار کررہا ہے۔

جیور (گوتم بدھ نگر): وزیر اعظم نریندر مودی نے نوئیڈا انٹرنیشنل ایر پورٹ کو شمالی ہندوستان کا لاجسٹک گیٹ وے قرار دیتے ہوئے آج کہا کہ اس سے اترپردیش کو 7 دہائیوں بعد وہ ملنا شروع ہوا ہے جس کا وہ حقدار تھا۔ مودی نے دہلی سے متصل ریاست کے ضلع گوتم بدھ نگر کے جیور میں نوئیڈا انٹرنیشنل ایر پورٹ کا سنگ بنیاد رکھنے کے بعد ایک بڑی عوامی ریالی سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ 21ویں صدی کا نیا ہندوستان آج ایک سے بڑھ کر ایک بہترین جدید ڈھانچے تیار کررہا ہے۔ بہتر سڑکیں‘ بہتر ریل نیٹ ورک‘ بہتر ایر پورٹ یہ صرف ڈھانچے کھڑا کرنے کا پراجکٹ نہیں ہوتے ہیں بلکہ یہ پورے خطہ کو نئی سمت فراہم کرتے ہیں اور لوگوں کی زندگی پوری طرح سے بدل دیتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ نوئیڈا انٹرنیشنل ایر پورٹ ہندوستان کا لاجسٹک گیٹ وے بنے گا۔

 یہ اس پورے خطہ کو قومی سرگرمی ماسٹر پلان کا ایک طاقتور عکس تیارکرے گا۔ انہوں نے کہا کہ ایر پورٹ کی تعمیر کے دوران روزگار کے ہزاروں مواقع ملتے ہیں۔ ایر پورٹ کو بہتر ڈھنگ سے چلانے کے لئے بھی مغربی اترپردیش کے ہزاروں لوگوں کو نیا روزگار ملے گا۔ انہوں نے کہا کہ ایکسپریس وے‘ میٹرو‘ریل‘ ڈی ایف سی وغیرہ سے جڑا ہوا یہ ایر پورٹ ارتباط کے معاملہ میں ملک کا مثالی ایر پورٹ ہوگا۔نریندر مودی نے کہا ”سابق حکومتوں نے جس اترپردیش کو محروم اور تاریکی میں رکھا تھا‘ پہلے کی حکومتوں نے جس اترپردیش کو ہمیشہ جھوٹے خواب دکھائے‘ وہی اترپردیش آج ملک ہی نہیں عالمی شناخت قائم کررہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ اترپردیش اور مرکز میں پہلے جو حکومتیں رہی ہیں انہوں نے کیسے مغربی اترپردیش کی ترقی کو نظر انداز کیا اس کی ایک مثال یہ جیور ایر پورٹ بھی ہے۔

2دہائیوں پہلے ریاست کی بی جے پی حکومت نے اس پراجکٹ کا خواب دیکھا تھا لیکن بعد میں یہ ایر پورٹ کئی سالوں تک مرکز اور لکھنو میں پہلی جو حکومتیں رہیں ان کے درمیان میں الجھ کر رہ گیا۔ اترپردیش میں پہلے جو حکومت تھی اس نے تو باضابطہ خط لکھ کر اس وقت کی مرکزی حکومت سے کہا تھا کہ اس ایر پورٹ کے پراجکٹ کو بند کردیا جائے۔وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا کہ مودی اور یوگی بھی چاہتے تو اپریل 2017 میں حکومت بنتے ہی یہاں آکر فوٹو کھنچوا لیتے لیکن ہوتا کچھ نہیں۔ انہوں نے کہا کہ پہلے سیاسی مفاد کے لئے ڈھانچے کھڑے کرنے کے پراجکٹوں کااعلان ہوتا تھا۔ پراجکٹ کیسے روبہ عمل لایا جائے‘ اس کے لئے رقم کا انتظام کیسے ہو‘ دہائیوں تک یہ اسی میں الجھا رہتا تھا۔ پھر بہانے بازی شروع ہوتی تھی۔

انہوں نے کہا کہ ڈھانچہ کھڑا کرنا ہمارے لئے سیاست نہیں بلکہ قومی پالیسی کا حصہ ہے۔ ہم اس امر کو یقینی بنارہے ہیں کہ پراجکٹوں کو التوا میں نہ رکھا جائے۔ ہم یہ یقینی بنانے کی کوشش کرتے ہیں کہ وقت مقررہ کے اندر ہی کام پورا کرلیا جائے۔ اب ڈبل انجن کی حکومت کی کوششوں سے آج ہم اس ایر پورٹ کا سنگ بنیاد اپنے ہاتھوں سے رکھ رہے ہیں۔مودی نے کہا کہ آزادی کے ساتھ دہائیوں بعد پہلی بار اترپردیش کو وہ مل رہا ہے جس کا وہ ہمیشہ سے حق دار رہا ہے۔ ڈبل انجن کی حکومت کی کوششوں سے آج اترپردیش ملک کے سب سے مربوط علاقہ میں تبدیل ہورہا ہے۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.