نوجوت سنگھ سدھو کی بھوک ہڑتال شروع کرنے کی دھمکی

منشیات کے مسئلہ پر عدم کاروائی چنی کے پیش روامریندرسنگھ کے خلاف ان کی ایک بڑی شکایت تھی، جنہیں اپنے ناقدین کے ساتھ ایک سال طویل جدوجہد کے بعد عہدہ سے مستعفی ہوناپڑا تھا۔

چندی گڑھ: پنجاب کانگریس کے صدر نوجوت سنگھ سدھونے آج بھی چرنجیت سنگھ چنی حکومت کے خلاف اپنی مہم جاری رکھی اوراعلان کیاکہ اگرمنشیات کی لعنت اور2015میں گروگرنتھ صاحب کی بیحرمتی سے متعلق رپورٹس کومنظرعام پر نہ لایاگیاتو وہ بھوک ہڑتال شروع کردیں گے۔

منشیات کے مسئلہ پر عدم کاروائی چنی کے پیش روامریندرسنگھ کے خلاف ان کی ایک بڑی شکایت تھی، جنہیں اپنے ناقدین کے ساتھ ایک سال طویل جدوجہد کے بعد عہدہ سے مستعفی ہوناپڑا تھا۔

سدھونے آج کہاکہ پارٹی منشیات کے خاتمہ کاوعدہ کرتے ہوئے برسراقتدارآئی تھی۔ سدھونے موگامیں ایک ریالی سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ اگرحکومت منشیات کی رپورٹ نہیں کھولتی ہے تومیں بھوک ہڑتال پر چلاجاؤں گا۔

ہمیں یہ بتانے کی ضرورت ہے کہ سابق چیف منسٹرنے ان رپورٹس کوکیوں دبا دیاتھا۔اب ان کی حکومت کو ان رپورٹس کومنظرعام پر لانے کی ضرورت ہے۔ منشیات کے مسئلہ پرریاستی ایجنسیوں کی رپورٹ سربمہرلفافہ میں ہائیکورٹ میں داخل کی جاچکی ہیں اورسدھو یہ چاہتے ہیں کہ ان کی تفصیلات سے عوام کوواقف کرایاجائے۔

امریندرسنگھ کی برطرفی کے باوجود پنجاب کانگریس میں حالات ٹھیک نہیں ہوئے ہیں۔ اس منصب جلیلہ(چیف منسٹری کے عہدہ کیلئے) مرکزی قیادت نے چنی کاانتخاب کیا جس کی وجہ سے سدھوکی امیدوں پر ایک بار پھرپانی پھرگیااورکرکٹرسے سیاستداں بنے سدھو نے ایک بار پھر ریاستی حکومت پر اپنے دباؤ میں اضافہ کردیاہے۔

چنی کی حلف برداری کے کئی دن بعد انہوں نے کابینہ، ریاستی پولیس سربراہ اورایڈوکیٹ جنرل کے عہدوں کیلئے چیف منسٹر کے انتخاب پر اپنی ناپسندیدگی کومحسوس کرادیا۔امریندرسنگھ کے استعفیٰ سے پہلے انہوں نے پارٹی چھوڑدینے کی دھمکی دی تھی اورآخر تک اپنے موقف پرڈٹے رہے تھے۔ ان کے اورچیف منسٹرکے درمیان صلح مکمل طورپرنہیں ہوئی ہے۔

ذریعہ
ایجنسیز

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.