پنجابی گلوکار موسے والا کی کانگریس میں شمولیت

پارٹی میں شمولیت کی تقریب کے دوران سدھو نے موسے والا کو نوجوانوں کا پسندیدہ شخص قرار دیا۔ سدھو نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے کہا کہ سدھو موسے والا ان کے خاندان میں شامل ہورہاہے۔وہ ان کا کانگریس میں خیر مقدم کرتے ہیں۔

چندی گڑھ: مشہور پنجابی گلوکار سدھو موسے والا جن پر ایک گانے میں تشدد اور بندوقوں کے کلچر کو فروغ دینے کے الزام کے تحت کیس درج ہے‘نے پنجاب اسمبلی انتخابات سے عین قبل آج کانگریس میں شمولیت اختیار کیا۔چیف منسٹر چرنجیت سنگھ چنی اور ریاستی صدر کانگریس نوجیت سنگھ سدھو کی موجود گی میں اس نے پارٹی میں شمولیت اختیار کی۔

پارٹی میں شمولیت کی تقریب کے دوران سدھو نے موسے والا کو نوجوانوں کا پسندیدہ شخص قرار دیا۔ سدھو نے ذرائع ابلاغ کے نمائندوں سے کہا کہ سدھو موسے والا ان کے خاندان میں شامل ہورہاہے۔وہ ان کا کانگریس میں خیر مقدم کرتے ہیں۔

موسے والا جس کا اصلی نام شبھ دیپ سنگھ سدھو ہے کو لیجنڈ‘ڈیول‘جسٹ لسن‘جاٹ دے مقابلہ اور ہتھیار جیسے مقبول پنجابی نغموں کیلئے شہرت حاصل ہے۔ سال 2018 میں کینڈا کے بل بورڈ البم میں ان کانام شامل کیا گیا تھا۔موسے والا نے کہا کہ وہ کوئی مقام حاصل کرنے یا ستائش کیلئے سیاست میں داخل نہیں ہورہے ہیں۔وہ سسٹم کو تبدیل کرنے کا ایک حصہ بننا چاہتے ہیں۔

وہ عوام کی آواز اٹھانے کانگریس میں شامل ہورہے ہیں۔وہ کانگریس میں اس لئے شامل ہورہے ہیں کہ اس پارٹی میں عام خاندانوں کے لوگ شامل ہیں۔اس نے مزید کہا کہ وہ ہنوز دیہات کے مکان میں بود وباش اختیار کئے ہوئے ہے۔ان کے والد ایک سابق فوجی ہیں اور اس کی ماں سرپنچ ہے۔ ان کے علاقہ کے باشندے ان سے اچھی توقعات رکھتے ہیں۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.