پنجاب میں کسانوں کا احتجاج‘ ٹریفک درہم برہم

مختلف کسان تنظیموں سے جڑے احتجاجیوں نے ہریانہ کی بی جے پی حکومت کے پتلے نذر آتش کئے جس نے کرنال میں کسانوں کے خلاف طاقت استعمال کی تھی۔ ہفتہ کے دن پولیس لاٹھی چارج میں کم از کم 10افراد زخمی ہوئے تھے۔

چندی گڑھ۔: پنجاب میں کسانوں نے اتوار کے دن دو گھنٹوں کیلئے سڑکیں اور شاہراہیں مسدود کردیں۔ وہ ہریانہ میں کاشتکاروں پر لاٹھی چارج کے خلاف احتجاج کر رہے تھے۔

مختلف کسان تنظیموں سے جڑے احتجاجیوں نے ہریانہ کی بی جے پی حکومت کے پتلے نذر آتش کئے جس نے کرنال میں کسانوں کے خلاف طاقت استعمال کی تھی۔ ہفتہ کے دن پولیس لاٹھی چارج میں کم از کم 10افراد زخمی ہوئے تھے۔ کسان‘ بی جے پی کے جلسہ کے خلاف احتجاج کرنے کرنال کی سمت بڑھ رہے تھے۔

پنجاب میں آج دوپہر 12بجے احتجاج شروع ہوا جو 2گھنٹے جاری رہا۔ اس احتجاج سے گاڑی چلانے والوں کو تکلیف ہوئی جو کئی مقامات پر ٹریفک جام کی وجہ سے پھنس گئے تھے۔

جالندھر پٹھان کوٹ ہائی وے‘ لدھیانہ چندی گڑھ ہائی وے‘ امرتسر گنگانگر ہائی وے اور فیروز پور۔زیرہ روڈ پر کئی مقامات پر گاڑیوں کی آمدورفت متاثر ہوئی۔

کسان سنگھرش مزدور کمیٹی کے جنرل سکریٹری سرون سنگھ پنڈھیر نے ہریانہ پولیس کے لاٹھی چارج کی مذمت کی۔

امرتسر میں احتجاج کے دوران پنڈھیر نے کہا کہ ہریانہ کے چیف منسٹر منوہرلال کھٹر کو اخلاقی بنیادوں پر مستعفی ہوجانا چاہیئے کیونکہ انہوں نے کسانوں کے خلاف پولیس کارروائی کے بعد برسراقتدار رہنے کا حق کھودیا ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.