ورون گاندھی کی ترنمول میں شمولیت کی قیاس آرائیاں

ورون گاندھی نے لکھیم پور کھیری میں کسانوں کی ہلاکت کی مذمت کی تھی جس سے اشارہ ملا تھا کہ بھگوا کیمپ کے ساتھ ان کے تعلقات تلخ ہوچکے ہیں۔ سیاسی ماہرین کا ماننا ہے کہ ورون ایک مستحکم پلیٹ فارم چاہیں گے۔

کولکتہ: سشمیتا دیو‘ بابل سپریو‘ لوزنہو فلیرو اور لینڈر پیس کے بعد قوی اشارے ہیں کہ بی جے پی رکن پارلیمنٹ ورون گاندھی ترنمول کانگریس میں شامل ہوجائیں گے۔ امکان ہے کہ ورون گاندھی‘ چیف منسٹر مغربی بنگال ممتا بنرجی کے آئندہ ہفتہ دورہ دہلی کے موقع پر ان سے ملاقات کریں گے۔منیکا گاندھی کے لڑکے کی ترنمول کانگریس میں شمولیت کی سرکاری توثیق نہیں ہوئی ہے تاہم پارٹی کے ایک سینئر قائد کے بموجب چیف منسٹر ممتا بنرجی کا آئندہ ہفتہ کا دورہ دہلی بے حد اہم ہے۔ یہ دورہ چونکا دینے والا ہوگا۔

 ترنمول کے ایک سینئر قائد نے اس معاملہ میں راست تبصرہ کئے بغیر کہا کہ جو قائدین بی جے پی سے خفا ہیں اور کانگریس میں جانے کی راہ ان کے پاس دستیاب نہیں ہے وہ ترنمول سے رابطہ میں ہیں۔ اب یہ واضح ہوچکا ہے کہ ممتا اور ترنمول‘ نریندر مودی کی راہ روکنے میں سب سے بڑارول ادا کرسکتی ہیں۔ حال میں بی جے پی نے ورون گاندھی اور ان کی ماں منیکا گاندھی کو بی جے پی کی نیشنل ورکنگ کمیٹی سے ہٹادیا۔ کہا جاتا ہے کہ گاندھی فیملی کا جونیر ایک نئے سیاسی پلیٹ فارم کی تلاش میں ہے۔

ورون گاندھی نے لکھیم پور کھیری میں کسانوں کی ہلاکت کی مذمت کی تھی جس سے اشارہ ملا تھا کہ بھگوا کیمپ کے ساتھ ان کے تعلقات تلخ ہوچکے ہیں۔ سیاسی ماہرین کا ماننا ہے کہ ورون ایک مستحکم پلیٹ فارم چاہیں گے اور ترنمول کانگریس ان کے لئے بہترین متبادل ثابت ہوسکتی ہے۔ ترنمول کانگریس کے ایک سینئر قائد نے شناخت ظاہر نہ کرنے کی شرط پر کہا کہ ورون گاندھی کانگریس میں نہیں جاسکتے لہٰذا وہ ایسی پارٹی چاہیں گے جو قومی پلیٹ فارم فراہم کرسکے۔ ترنمول کانگریس قومی سطح پر اپنے وجود کا احساس دلانے لگی ہے۔ دونوں کے لئے صورتِ حال ”وِن وِن“ ہوگی۔

یہ بھی اشارے ہیں کہ 2019میں جنتا دل ایس چھوڑکر بی ایس پی شامل ہونے والے دانش علی بھی ترنمول کانگریس میں شامل ہوسکتے ہیں کیونکہ پارٹی سربراہ مایاوتی سے ان کی نہیں بن رہی ہے۔ گزشتہ برس مایاوتی نے دانش علی کو قائد لوک سبھا کے عہدہ سے ہٹادیا تھا۔ سرکاری ذرائع کے بموجب ممتا بنرجی 22  نومبر کو دہلی جاسکتی ہیں۔ واپسی 25  نومبر کو ہوگی۔ 2 روزہ دورہ میں ان کی ملاقات وزیراعظم سے ہوسکتی ہے۔ امکان ہے کہ چیف منسٹر مغربی بنگال‘ اپوزیشن جماعتوں کے قائدین بشمول سونیا گاندھی سے بھی ملاقات کریں گی۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.