پاکستان نے کشمیر پر دستاویز جاری کی

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے مشیر برائے قومی سلامتی امور معید یوسف اور وزیر انسانی حقوق شیریں مزاری کے ساتھ اسلام آباد میں ایک پریس کانفرنس کے دوران 131 صفحات پر مشتمل دستاویز کو جاری کیا۔

اسلام آباد: پاکستان نے آج ایک دستاویز کو منظر عام پر لایا جس میں یہ دعویٰ کیا گیا کہ یہ کشمیر میں ہندوستانی حکام کی جانب سے مبینہ انسانی حقوق خلاف ورزیوں کی تفصیلات پر مشتمل ہے۔

وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے مشیر برائے قومی سلامتی امور معید یوسف اور وزیر انسانی حقوق شیریں مزاری کے ساتھ اسلام آباد میں ایک پریس کانفرنس کے دوران 131 صفحات پر مشتمل اس دستاویز کو جاری کیا۔

انہوں نے کہا ”ہم نے یہ طئے کیا ہے کہ ہم ہمارا رول ادا کریں گے اور اس (ہندوستانی) حکومت کے  حقیقی چہرہ کو بے نقاب کریں گے جو یہ دعویٰ کررہی ہے کہ یہ دنیا کی سب سے بڑی جمہوریت ہے“ اور وضاحت کی کہ دستاویز اقوام متحدہ اور مابقی بین الاقوامی برادری کے حوالہ بھی کی جائے گی۔

 ہندوستان بار بار پاکستان سے یہ کہتا آرہا ہے کہ جموں وکشمیر ”اس ملک کا اٹوٹ حصہ ہے اور ہمیشہ برقرار رہے گا۔

اس کی جانب سے پاکستان کو یہ مشورہ بھی دیا گیا ہے کہ وہ اس حقیقت کو قبول کرے اور مخالف ہند پروپگنڈہ روک دیں۔

نئی دہلی اس سے پہلے اسلام آباد سے یہ بھی کہہ چکا ہے کہ جموں وکشمیر کے امور اس کا اندرونی معاملہ ہے اور ملک اس کے اپنے مسائل کو حل کرنے کے قابل ہے۔

انہوں نے اقوام متحدہ سے خواہش کی کہ وہ مبینہ جنگی جرائم میں ملوث انفرادی شخصیتوں اور یونٹوں کے ناموں کو ریکارڈ کرے اور ان پر تحدیدات عائد کرے۔

 دستاویز میں یہ بھی الزام عائد کیا گیا ہے کہ کشمیر میں کیمیائی اسلحہ کا استعمال کیا گیا ہے جو قریشی کے بقول کیمیائی ہتھیاروں کے کنونشن کے بالکل برخلاف ہے اور یہ کہ یہ ضروری ہوگیا ہے کہ ”غیر جانبدارانہ بین الاقوامی تحقیقات کرائی جائے“۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.