کیرالا میں لو پاکستان کے غبارے ہائپر مارکٹ کے خلاف کیس درج

منیجنگ ڈائرکٹر کیر فریش ہائپر مارکٹ نے کہا کہ ہم 50 برس سے بزنس میں ہیں۔ اس غبارہ کے بارے میں سننے کے بعد مقامی پولیس ہمارے پاس آئی تھی۔ ہم نے پولیس کو غباروں کا پیاکٹ دکھادیا جو 100 غباروں کا پیاک ہوتاہے۔

ترواننت پورم: کیرالا میں کوہیکوڈ کے قریب ایک ہائپر مارکٹ کا مالک اس وقت مشکل میں گھرگیا جب اس کی ہائپر مارکٹ سے بیچے گئے غباروں کے پیاکٹ پر ”لو پاکستان“ لکھا پایا گیا۔ مقامی زبان کے اخبارات نے منگل کے دن ایک نیوز آئٹم شائع کیا۔

 آئی اے این ایس سے بات چیت میں منیجنگ ڈائرکٹر کیر فریش ہائپر مارکٹ نے کہا کہ ہم 50 برس سے بزنس میں ہیں۔ اس غبارہ کے بارے میں سننے کے بعد مقامی پولیس ہمارے پاس آئی تھی۔ ہم نے پولیس کو غباروں کا پیاکٹ دکھادیا جو 100 غباروں کا پیاک ہوتاہے۔ یہ پراڈکٹ میڈ اِن چائنا (چین کا بنا) ہے۔ ہمیں یہ ممبئی کے ایک سپلائر کے ذریعہ ملا ہے۔ یہ پیاکٹس بنیادی طورپر ان لوگوں کو بیچے جاتے ہیں جو سالگرہ مناتے ہیں۔

 ہم نے صرف گاہکوں کو یہ پیاکٹ فروخت کردیا۔ ہم پیاکٹ کھول کر کسی بھی غبارہ کو ہوا بھر کر نہیں دیکھتے۔ خبر آنے کے بعد ہم نے اسے کھول کر دیکھا۔ پیاکٹ میں مختلف سائز اور شکل کے غبارے پائے گئے۔ چند غبارے ایسے ہیں جن میں ہوا بھرنے کے بعد لو پاکستان لکھا دکھائی دیتا ہے۔

 پولیس کے آنے کے بعد ہم نے اس پراڈکٹ کو کاؤنٹر سے ہٹادینے کا فیصلہ کیا۔پولیس کو اصل مسئلہ کا پتہ چل گیا۔ اس نے کہا کہ وہ اپنی ڈیوٹی کررہی ہے اور اسے کیس درج کرنا ہوگا۔ پولیس ہمارے ممبئی سپلائر سے ربط پیدا کرے گی۔ ہم نے کوئی غلطی نہیں کی ہے۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.