امارات سے قبل ہندوستان میں ہائپر لوپ کے آغاز کا امکان

اماراتی ملٹی نیشنل لاجسٹکس کمپنی ڈی پی ورلڈ کے سی ای او سلطان احمد بن سُلیم نے اتوار کے دن یہ بات بتائی۔

دوبئی: ہائپر لوپ (مسافرین اور مال برداری کیلئے ہائی اسپیڈ ماس ٹرانسپورٹیشن سسٹم) امکان ہے کہ متحدہ عرب امارات سے قبل ہندوستان یا سعودی عرب میں شروع ہوجائے گا۔

اماراتی ملٹی نیشنل لاجسٹکس کمپنی ڈی پی ورلڈ کے سی ای او سلطان احمد بن سُلیم نے اتوار کے دن یہ بات بتائی۔

یکم اکتوبر سے 6ماہ تک جاری رہنے والی نمائش دوبئی ایکسپو 2020کے حاشیہ پر انہوں نے کہا کہ تیز رفتار ٹرانسپورٹ سسٹم جاریہ دہے میں دنیا کے بیشتر حصوں میں حقیقت بن جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ اس کی شروعات پہلے ہندوستان یا سعودی عرب میں ہوگی۔ غالباً ٹرک کے اخراجات میں ہوئی جہاز کی رفتار ملے گی۔ اس سسٹم کو کئی کمپنیاں ڈیولپ کر رہی ہیں جن میں ورجن ہائیپر لوپ شامل ہے۔

اس میں دوبئی کے پورٹ آپریٹر ڈی پی ورلڈ کی بڑی حصہ داری ہے۔ ہائپر لوپ‘ سیلڈ ٹیوب یا سسٹم آف ٹیوبس ہوتا ہے جس میں ہوا کا دباؤ کم رہتا ہے۔ کمپنی نے گذشتہ برس دسمبر میں پہلی مرتبہ ہائپر لوپ پوڈ میں انسانی سفر کا تجربہ کیا تھا۔

فروری 2018میں ورجن ہائپر لوپ کے رچرڈ برانسن نے پونے اور نوی ممبئی کے درمیان ہائپر لوپ سسٹم کے منصوبہ کا اعلان کیا تھا۔

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.