این سی بی نے شاہ رخ خان سے رشوت مانگی تھی

کروز شپ میں منشیات پارٹی پر دھاوے کے کیس کے ایک گواہ نے نارکوٹکس کنٹرول بیورو پر الزام عائد کیا ہے کہ اس نے بالی ووڈ میگا اسٹار شاہ رخ خان سے ان کے لڑکے کو رہا کرنے کیلئے رشوت مانگی تھی۔

ممبئی: آرین خان کیس میں ایک نیا چونکا دینے والا انکشاف ہوا ہے۔ کروز شپ میں منشیات پارٹی پر دھاوے کے کیس کے ایک گواہ نے نارکوٹکس کنٹرول بیورو پر الزام عائد کیا ہے کہ اس نے بالی ووڈ میگا اسٹار شاہ رخ خان سے ان کے لڑکے کو رہا کرنے کیلئے رشوت مانگی تھی۔

 گواہ‘ پربھاکر سائل نے ممبئی میں اتوار کے دن مختلف ٹی وی چینلوں سے کھلے عام کہا کہ اسے کسی اور نہیں بلکہ این سی بی کے زونل ڈائرکٹر سمیر وانکھیڈے سے جان کا خطرہ ہے۔ اس پر ہنگامہ برپا ہوگیا۔ نام نہاد خانگی جاسوس کرن پی گوساوی کے پرسنل باڈی گارڈ پربھاکر سائل نے دستخط کردہ حلفیہ بیان اور آرین خان کی گرفتاری کے ویڈیوز جاری کئے ہیں۔

 این سی بی کے 9گواہوں میں وہ ایک ہے۔ اس کا دعویٰ ہے کہ این سی بی نے اس سے 10سادہ کاغذات پر دستخط لئے تھے۔ اسے اب وانکھیڈے سے اپنی جان کا خطرہ ہے۔ سائل نے حلفنامہ میں کہا کہ اس نے گوساوی اور سیم ڈیسوزا کو 24کروڑ کی معاملت پر بات کرتے سنا۔ وہ 18کروڑ پر راضی ہوگئے تھے جس میں 8کروڑ روپئے وانکھیڈے کو ملنے تھے۔

 اس نے کہا کہ اس نے شاہ رخ خان کی مینیجر پوجا ڈڈلانی کو آرین خان کی گرفتاری کے بعد این سی بی دفتر آتے دیکھا تھا۔ اس نے یہ بھی دیکھا تھا کہ گوساوی اور ڈیسوزا‘ پوجا کی گاڑی کے اندر اس سے بات کر رہے ہیں۔ سائل نے الزام عائد کیا کہ گوساوی نے اسے ہدایت دی تھی کہ وہ انڈیانا ہوٹل کے قریب ایک مقام سے 50لاکھ روپئے کی رقم جاکر لے آئے۔ اس نے کہا تھا کہ وہ یہ بیاگ ڈیسوزا کو ٹرائیڈنٹ ہوٹل کے قریب حوالہ کردے جہاں اس نے گنا تو پتہ چلا کہ اس میں 38لاکھ روپئے ہیں۔

سائل کے الزامات پر این سی بی کے ڈپٹی ڈائرکٹر جنرل ساؤتھ ویسٹ ریجن ایم اشوک جین نے کہا کہ وانکھیڈے نے واضح طورپر ان الزامات کی تردید کردی ہے۔ سائل کی سرزنش کرتے ہوئے جین نے کہا کہ وہ چونکہ عدالت میں زیر دوران کیس کا گواہ ہے اسے اپنی بات عدالت سے کہنی چاہیئے نہ کہ سوشل میڈیا کے ذریعہ۔حلفنامہ میں سائل نے کہا کہ گوساوی لاپتہ ہے اور اسے اندیشہ ہے کہ این سی بی عہدیداروں یا دیگر افراد نے اس کا اغواء کرلیا ہوگا یا اسے مارڈالا ہوگا۔

 گوساوی جسے کئی کیسس کا سامنا ہے جاریہ ماہ اس وقت مرکز توجہ بنا تھا جب نیشنلسٹ کانگریس پارٹی کے ترجمان اور مہاراشٹرا کے وزیر نواب ملک نے گوساوی اور این سی بی دھاوے سے جڑے دیگر بی جے پی قائدین کو بے نقاب کیا تھا۔ بی جے پی اور این سی بی‘ نواب ملک کے الزامات کو مسترد کرچکے ہیں۔ نواب ملک نے مزید سچائی سامنے لانے کی دھمکی دی ہے۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.