مودی حکومت تیل کی آمدنی خاموشی سے ہضم کررہی ہے: چدمبرم

چدمبرم نے ایک بیان میں کہا کہ کیرالا کے وزیر خزانہ نے ایک انکشاف کرتے ہوئے کہا ہے کہ مرکزی حکومت تیل سے کی گئی کمائی کو ڈکار رہی ہے اور اس پیسے میں ریاستوں کو برائے نام انھیں حصہ دار بنا رہی ہے۔

نئی دہلی: کانگریس کے سینیئر رہنما اور سابق مرکزی وزیر پی چدمبرم نے حکومت پر ’کوآپریٹیو فیڈرلزم‘ کی دھجیاں اڑانے کا الزام عائدکرتے ہوئے کہا ہے کہ اس نے پٹرول ڈیزل پر ٹیکس لگا کر جو کمائی کی ہے، اس کا حصہ ریاستوں کو نہیں دیا ہے۔

چدمبرم نے ہفتے کے روز یہاں ایک بیان میں کہا کہ کیرالا کے وزیر خزانہ نے ایک انکشاف کرتے ہوئے کہا ہے کہ مرکزی حکومت تیل سے کی گئی کمائی کو ڈکار رہی ہے اور اس پیسے میں ریاستوں کو برائے نام انھیں حصہ دار بنا رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ کیرالا کے وزیر خزانہ نے پٹرول اور ڈیزل پر اکٹھا کئے گئے ٹیکس کے اعداد و شمار کا انکشاف کیا ہے۔ یہ اعداد و شمار بتاتے ہیں کہ 2020-21 ایکسائز ڈیوٹی، سیس اور ایڈیشنل ایکسائز ڈیوٹی کے طور پر مرکز نے تین لاکھ 27 ہزار کروڑ روپیے اکٹھا کیے ہیں۔ ان میں محض 18000 کروڑ روپیے بنیادی ایکسائز ڈیوٹی کے طور پر اکٹھا کیے اور اس رقم کا 41 فیصد ریاستوں کے ساتھ اشتراک کیا تھا۔ اس میں باقی 3 لاکھ 54 ہزار کروڑ روپیے مرکز کے پاس گئے۔

کانگریس لیڈر نے کہا کہ اگر یہ حقیقت ہے اور کیرالا کے وزیر خزانہ کی مخالفت مناسب ہے تو مرکزی وزیر کو خاموش رہنے کے بجائے اس کا جواب دینا چاہیے۔

ذریعہ
یو این آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.