پانچ ریاستوں میں 10 فروری سے 7 مرحلوں میں اسمبلی الیکشن

الیکشن شیڈول کا اعلان کرتے ہوئے چیف الیکشن کمشنر سشیل چندرا نے کہا کہ ریالیوں‘ روڈ شوز‘ نکڑ سبھا‘ پدیاترا اور گاڑیوں کی ریالیوں پر جو امتناع عائد کیا گیا ہے اس پر 15 جنوری کو نظرثانی کی جائے گی۔

نئی دہلی: اترپردیش‘ اتراکھنڈ‘ پنجاب‘ منی پور اور گوا میں اسمبلی الیکشن 10 فروری اور 7  مارچ کے درمیان 7 مرحلوں میں ہوگا۔ ووٹوں کی گنتی 10 مارچ کو ہوگی۔ الیکشن کمیشن نے ہفتہ کے دن یہ اعلان کیا۔ اس نے بڑھتے کووِڈ کیسس کے مدنظر ریالیوں اور روڈ شوز پر 15 جنوری تک امتناع عائد کردیا۔

 اسمبلی الیکشن کی بڑی سیاسی اہمیت ہے کیونکہ ان 5 ریاستوں میں سے 4 میں بی جے پی برسراقتدار ہے اور وہ کانگریس زیراقتدار پنجاب پر قبضہ کے لئے پورا زور لگارہی ہے۔ عام آدمی پارٹی بھی ایک اہم کھلاڑی بن کر ابھررہی ہے۔ الیکشن شیڈول کا اعلان کرتے ہوئے چیف الیکشن کمشنر سشیل چندرا نے کہا کہ ریالیوں‘ روڈ شوز‘ نکڑ سبھا‘ پدیاترا اور گاڑیوں کی ریالیوں پر جو امتناع عائد کیا گیا ہے اس پر 15 جنوری کو نظرثانی کی جائے گی۔

یہ پوچھنے پر کہ ماہرین فروری میں کووِڈ کی تیسری لہر کے عروج کی پیش قیاسی کررہے ہیں تو چیف الیکشن کمشنر نے جواب دیا کہ صورتِ حال تیزی سے بدل رہی ہے اور آئندہ کیا ہوگا کچھ کہا نہیں جاسکتا۔ مجموعی طورپر 690  اسمبلی نشستوں کے لئے ووٹ ڈالے جائیں گے۔ 18کروڑ 30 لاکھ رائے دہندے 5 ریاستوں میں ووٹ ڈالنے کے اہل ہیں جن میں خواتین کی تعداد 8 کروڑ 50 لاکھ ہے۔

سیاسی لحاظ سے اہم ریاست اترپردیش میں ووٹنگ مغربی علاقہ سے شروع ہوگی اور 7 مرحلوں میں مشرق کا رخ کرے گی۔ ریاست میں 10 فروری تا 7  مارچ 7 مرحلوں میں 403  اسمبلی حلقوں میں ووٹ ڈالے جائیں گے۔ منی پور کے 60 حلقوں میں 2 مرحلوں میں (27  فروری اور 3 مارچ) ووٹنگ ہوگی۔

 گوا کے 40 حلقوں‘ پنجاب کے 117حلقوں اور اتراکھنڈ کے 70 حلقوں میں 14فروری کو پولنگ ہوگی۔ شیڈول کے اعلان کے ساتھ ہی 5 ریاستوں میں مثالی ضابطہ ئ اخلاق لاگو ہوگیا۔ چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ کووِڈ پروٹوکول پر عمل درآمد نہ کیا گیا تو کمیشن‘ سیاسی جماعتوں کو آئندہ کی ریالیوں سے روکنے میں پس و پیش نہیں کرے گا۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ 5 ریاستوں میں 15کروڑ سے زائد افراد پہلا ٹیکہ اور 9 کروڑ سے زائد افراد دوسرا ٹیکہ لے چکے ہیں۔ یو این آئی کے بموجب چیف الیکشن کمشنر نے کہا کہ 15 جنوری تک کوئی ریالی‘ پدیاترا یا  روڈ شو نہیں ہوگا۔ ڈیجیٹل یا ورچول موڈ میں مہم چلانی ہوگی۔

فزیکل ریالیوں کی جب بھی اجازت دی جائے گی‘ سیاسی جماعتوں کو جلسہ گاہ کے انٹری اور اکزٹ پوائنٹ پر ماسک تقسیم کرنے ہوں گے اور سانیٹائزرس رکھنے ہوں گے۔ امیدوار‘ نامزدگی فارم آن لائن پرکرسکتے ہیں۔

 حلف نامہ بھی آن لائن پر کیا جاسکتا ہے تاہم نامزدگی کی فزیکل کاپی ریٹرننگ عہدیدار کو دینی ہوگی۔ سیکوریٹی ڈپازٹ کی رقم بھی آن لائن جمع کرائی جاسکتی ہے۔ تمام پولنگ اسٹیشنس میں ٹمپریچر اسکریننگ ہوگی‘ ماسک اور سانیٹائزر بھی فراہم کئے جائیں گے۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.