آندھراپردیش میں نائٹ کرفیوکانفاذ

ریاست میں گذشتہ چندونوں کے دوران کورونا کے اچانک بڑھتے کیسس کومدنظررکھتے ہوئے حکومت نے آج نائٹ کرفیوکے نفاذکا فیصلہ کیاہے۔گزشتہ5دنوں کے دوران کووڈ کیسوں کی تعداد4 ہزار سے متجاوزکرگئی ہے۔

امراوتی: حکومت آندھراپردیش نے پیر کے روزسے ریاست میں کووڈنائٹ کرفیونافذ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ نائٹ کرفیوکے اوقات11 بجے شب سے5بجے صبح رہیں گے۔

ریاست میں گذشتہ چندونوں کے دوران کورونا کے اچانک بڑھتے کیسس کومدنظررکھتے ہوئے حکومت نے آج نائٹ کرفیوکے نفاذکا فیصلہ کیاہے۔گزشتہ5دنوں کے دوران کووڈ کیسوں کی تعداد4 ہزار سے متجاوزکرگئی ہے۔

ایک اعلیٰ سطحی اجلاس میں چیف منسٹروائی ایس جگن موہن ریڈی نے ریاست میں کووڈ کی صورتحال کاجائزہ لیا۔

اجلاس میں چیف منسٹر جگن نے محکمہ صحت وطبابت کے عہدیداروں کو کوروناوباء کے پھیلاؤ کوروکنے کیلئے مزید سخت تحدیدات نافذ کرنے اورعوام کوکووڈ قواعدپرعمل آوری کویقینی بنانے کی ہدایت دی ہے۔

اب سے آوٹ ڈورتقاریب میں صرف 200 افراد کوشرکت کی اجازت رہے گی جبکہ ان ڈورتقاریب میں ایک سوافراد شرکت کرسکتے ہیں۔

سینماہالس اورآڈیٹوریمس میں شرکاکوایک نشست چھوڑکر دوسری نشست پربیٹھنے یعنی 50فیصدنشستوں کے ساتھ تھیڑس چلانے کی اجازت رہے گی۔

تمام عبادت گاہوں میں سماجی فاصلہ کے اصول پرسختی کے ساتھ عمل کرنا لازمی رہے گا۔عوام کوفیس ماسک کا استعمال کرنا ضروری ولازمی رہے گا بصورت دیگر جرمانے عائد کئے جائیں گے۔ شاپس اور کاروباری اداروں میں تمام کووڈ تحدیدات کوسختی کے ساتھ لاگوکرناہوگا۔

چیف منسٹرنے ہیلت عہدیداروں سے خطاب کرتے ہوئے یہ ہدایت دی۔ چیف منسٹر جگن موہن ریڈی نے عہدیداروں کو ریاست کے ہر ایک اسمبلی حلقوں میں ایک کووڈ کیئر سنٹر کے قیام کی ہدایت دی اوراس سنٹرمیں تمام تر عصری سہولتیں دستیاب کرائی جانی چاہئے۔

اس طرح175اسمبلی حلقوں میں یہ سنٹرس قائم کئے جانے چاہئے۔انہوں نے 104 ایمرجنسی کال سنٹرکومستحکم بنانے کی ہدایت دی اورکہاکہ وصول ہونے والے ہرکال پرفوری طبی مددفراہم کی جانی چاہئے۔

ذریعہ
پی ٹی آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.