آندھرا کی خاتون ایم ایل سی کریم النساء کا انتقال

جگن موہن ریڈی نے ایم ایل سی کے افراد خاندان سے دلی تعزیت کا اظہار کیا اور کہا کہ مسلم برادری سے تعلق رکھنے والی کریم النساء نے بحیثیت وجئے وارہ کارپوریٹر گرانقدر خدمات انجام دی تھیں۔

وجئے واڑہ: آندھرا پردیش قانون ساز کونسل کی رکن محمد کریم النساء جن کا تعلق حکمراں جماعت وائی ایس آر کانگریس پارٹی سے تھا‘ کا حرکت قبل بند ہوجانے سے جمعہ کو رات دیر گئے انتقال ہوگیا۔ وہ 56 برس کی تھیں۔ خاندان کے ارکان کے مطابق بے چینی کی شکایت کے بعد کریم النساء کو خانگی ہاسپٹل لے جایاگیا جہاں انہوں نے کل نصف شب کے قریب آخری سانس لی۔ ڈاکٹرس کہہ رہے تھے کہ انہیں قلب پر شدید حملہ ہوا ہے۔

 وائی ایس آر کانگریس پارٹی کی خاتون قائد کے پسماندگان میں شوہر محمد سلیم اور 5 فرزندان شامل ہیں۔ کریم النساء کو صحت کے چند مسائل کا سامنا تھا وہ دوائیں لے رہی تھیں۔ جمعرات اور جمعہ کو انہوں نے قانون ساز کونسل کے سیشن میں شرکت کی تھی۔ انہوں نے پیر کے روز چیف منسٹر جگن سے بھی ملاقات کی تھی۔ 30مارچ کو انہیں ایم ایل اے کوٹہ کے تحت 6 سالہ میعاد کیلئے رکن منتخب کیا گیا تھا۔

قبل ازیں وہ، وجئے واڑہ کی کارپوریٹر منتخب ہوئی تھیں۔ چیف منسٹر نے کریم النساء کو‘ کونسل کیلئے نامزد کرنے کا حیرت انگیز فیصلہ کیا تھا۔ چیف منسٹر جگن موہن ریڈی نے خاتون ایم ایل سی کے اچانک انتقال پر صدمہ کا اظہار کیا۔ انہوں نے کہا کہ کریم نگر النساء کی موت،بڑے صدمہ سے کم نہیں ہے۔

جگن موہن ریڈی نے ایم ایل سی کے افراد خاندان سے دلی تعزیت کا اظہار کیا اور کہا کہ مسلم برادری سے تعلق رکھنے والی کریم النساء نے بحیثیت وجئے وارہ کارپوریٹر گرانقدر خدمات انجام دی تھیں۔ جس کے سبب انہیں ایم اہل سی بنایا گیا۔ انہوں نے خاندان کو تیقن دیا کہ ان کی پارٹی ہمیشہ آپ کے ساتھ کھڑی رہے گی۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.