اقتدار میں واپسی کے بعد ہی اسمبلی میں قدم رکھوں گا۔ چندرا بابونائیڈو روپڑے

نائیڈو اپنے جذبات پر قابو نہیں رکھ پائے اور ان کی آنکھوں سے آنسو بہنے لگے۔ پارٹی کے ارکان نائڈو کو تسلی دی اور ان کے ساتھ ان کے گھر گئے جہاں نائیڈؤ نے اقتدار میں واپسی کے بعد ہی اسمبلی میں قدم رکھنے کے اپنے فیصلہ کا اعلان کیا ہے۔

امراوتی: تلگودیشم پارٹی کے سربراہ این چندرا بابو نائیڈو نے جمعہ کے روز قسم کھائی کہ ریاست میں اقتدار پر واپسی کے بعد ہی و اے پی قانون ساز اسمبلی میں دوبارہ قدم رکھیں گے۔ ایوان میں آج اپنے جذباتی بیان میں قائد حزب اخلاف نے کہا کہ حکمراں جماعت وائی ایس آر کانگریس پارٹی کے ارکان، مسلسل میری توہین کررہے ہیں۔ جس سے مجھ کو بے حد تکلیف ہوتی ہے۔ گذشتہ ڈھائی برسوں سے وہ، توہین وبے عزتی کو برداست کرتے آئے ہیں لیکن مزید برداشت کرنا ممکن نہیں ہے۔

ان ارکان نے آج میری اہلیہ کونشانہ بنایا ہے۔ میں نے ہمیشہ پروقار زندگی گذاری ہے اور میں نے اپنے وقار، توقیر کو برقرار رکھا ہے۔ نائیڈو نے یہ بات کہی۔ مسلسل بات کرنے پر اسپیکر ٹی سیتا رام نے نائیڈو کا مائک بند کردیا جبکہ حکمراں جماعت کے ارکان نے نائیڈو کے ریمارک کو ”ڈرامہ“ قرار دیا۔

 زرعی شعبہ پر مختصر مدتی مباحث کے دوران ایوان میں دونوں طرف سے سخت الفاظ کا تبادلہ ہوا۔ اس دوران نائیڈو آپے سے باہر ہوگئے۔ بعدازاں انہوں نے اپنے چیمبر میں پارٹی کے ارکان کا اجلاس طلب کیا جس میں وہ بتایا جاتا ہے کہ اپنے جذبات پر قابو نہیں رکھ پائے اور ان کی آنکھوں سے آنسو بہنے لگے۔ پارٹی کے ارکان نائڈو کو تسلی دی اور ان کے ساتھ ان کے گھر گئے جہاں نائیڈؤ نے اقتدار میں واپسی کے بعد ہی اسمبلی میں قدم رکھنے کے اپنے فیصلہ کا اعلان کیا ہے۔

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.