آندھراپردیش کی معیشت تباہ۔ جگن کی حکومت ذمہ دار : ٹی ڈی پی

رام کرشنوڈو نے الزام عائد کیا کہ حکومت اے پی، اپوزیشن اور عوام کی آواز کو دبانے کیلئے سیاسی دہشت گردی کا استعمال کررہی ہے۔

وجئے واڑہ: تلگودیشم پارٹی کے سینئر قائد و سابق وزیر فینانس وائی ایس کرشنوڈو نے چہارشنبہ کے روز چیف منسٹر وائی ایس جگن کی زیر قیادت حکومت آندھرا پردیش کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا اور الزام عائد کیا کہ حکومت کی مخالف عوام پالیسیوں سے ریاست کی آمدنی میں اضافہ کے تمام وسائل تباہ ہوگئے ہیں۔

رام کرشنوڈو نے اس بات پر تشویش کا اظہار کیا کہ مالیاتی سال22-2021 کے اختتام پر اے پی کا قرض 5لاکھ کروڑ روپے تک پہنچ جائے گا اور اس تباہ کن صورتحال کیلئے جگن حکومت کی مالیاتی بدانتظامی ذمہ دار ہے ریاستی حکومت، قرض پر مجموعی طور پر سود اور سرمایہ کی شکل میں ایک لاکھ کروڑ روپے اداکررہی ہے۔

جگن موہن ریڈی نے ریاست کی معیشت کو ناقابل تلافی نقصان پہنچایا ہے جس سے آنے والی حکومت کچھ بھی اچھا کرنے کی کوشش نہیں کرپائے گی۔

رام کرشنوڈو نے الزام عائد کیا کہ حکومت اے پی، اپوزیشن اور عوام کی آواز کو دبانے کیلئے سیاسی دہشت گردی کا استعمال کررہی ہے۔

یہاں اخباری نمائندوں سے بات چیت کرتے ہوئے تلگودیشم پارٹی کے قائد نے کہا کہ چیف منسٹر کو یہ سمجھنا چاہئے کہ ان کی کابینہ بنیادی طور پر اسمبلی میں جوابدہ ہے۔ ریاستی کابینہ کے تمام فیصلوں کو اسمبلی میں زیر بحث لانا ہوگا۔

ایوان میں ریاست اور عوام سے مربوط مسائل اٹھانے کا ارکان کو موقع دینا چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ بی اے سی کے اجلاس میں ٹی ڈی پی سی ایل بی، ایوان کی کاروائی 15دنوں تک چلانے کا مطالبہ کرے گی۔

ذریعہ
یو این آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.