طوفان گل آب۔ ساحلی اے پی میں ہائی الرٹ،شدید بارش کا امکان

طوفانی ہواؤں کے جھکڑ کے چلنے اور انتہائی شدید بارش کی وجہ سے جھونپڑیوں، پاور اور کمیونیکشن کی لائنوں کو جزوی نقصان پہنچنے کا خدشہ ظاہر کیا گیا ہے۔

وشاکھا پٹنم: خلیج بنگال میں ”طوفان گل۔ آب“ جو آج شام شمال آندھرا پردیش۔ اڈیشہ کے جنوب ساحل سے ٹ کرائے گا، کے پیش نظر اتوار کے روز آندھرا پردیش کے ساحلی اضلاع میں ہائی الرٹ کا اعلان کیا گیا ہے۔ شمال ساحلی اے پی کے اضلاع کے عہدیداروں کو چوکس رہنے کا حکم دیا گیا ہے اور ان عہدیداروں کو اتوار کی شام کا لنگا پٹنم اور گوپال کے درمیان طوفان گل۔ آب کے ساحل سے ٹکرانے کے نتیجہ میں ہونے والی شدید سے انتہائی شدید بارش سے پیدا ہونے والی صورتحال سے نمٹنے کیلئے تیار رہنے کا حکم دیا گیا ہے۔

 محکمہ موسمیات نے آندھرا پردیش کے شمال اور اڈیشہ کے جنوبی ساحل پرطوفان سے متعلق وارننگ جاری کی ہے۔ محکمہ موسمیات کے مطابق طوفان گل آب، اتوار کی شام کے وقت کا لنگا پٹنم (اے پی) اور گوپال پور (اڈیشہ) کے ساحل سے ٹکرائے گا۔ سائیکلون وارننگ سنٹر و شاکھا پٹنم نے انتباہ جاری کرتے ہوئے بتایا کہ طوفان کے ساحل سے ٹکرانے کے وقت سمندر میں 0.5 میٹر بلند لہریں اٹھیں گی جس کے سبب اضلاع سریکاکولم وجیا نگرم، گنجام کے نشیبی علاقوں میں پانی داخل ہونے کا امکان ہے۔

 طوفان کے زیر اثر آئندہ24 گھنٹوں کے دوران سریکاکولم، وجیانگرم اور وشاکھا پٹنم کے ایک یا دو مقامات پر شدید بارش کا امکان ہے جبکہ اضلاع مشرقی و مغربی گوداوری اور یانم کے چند مقامات پر شدید سے انتہائی شدید بارش کی پیش قیاسی کی گئی ہے جبکہ جنوب ساحلی اے پی میں ایک یا دو مقامات پر انتہائی شدید بارش کا امکان ہے۔45-55 کیلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے ہوائیں چلنا شروع ہوں گی اور 65 کیلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے ہوائیں ساحل (جنوبی ساحل اے پی) سے  ٹکرائیں گی۔

دوپہر کے بعد ہوا کے جھکڑ کی رفتار میں 75-88کیلو میٹر فی گھنٹہ کا بتدریج اضافہ ہوگا۔ سمندر کی صورتحال انتہائی خراب رہے گی۔ اور ماہی گیروں کو پیر تک سمندر میں جانے سے منع کر دیا گیا ہے۔ وشاکھا پٹنم گنگا ورم اور کاکیناڈا بندرگاہوں پر مقامی انتباہی کا تیسرا سگنل جاری کردیا گیا جبکہ مچھلی پٹنم، نظام پٹنم، اور کرشنا پٹنم بندرگاہوں، دوسرے درجہ کا انتہائی سگنل جاری کردیا گیا ہے۔

 طوفانی ہواؤں کے جھکڑ کے چلنے اور انتہائی شدید بارش کی وجہ سے جھونپڑیوں، پاور اور کمیونیکشن کی لائنوں کو جزوی نقصان پہنچنے کا خدشہ ظاہر کیا گیا ہے۔درختوں کے گرنے، شاخوں کے برقی لائنوں پر گرنے سے املاک کو نقصان ہوگا۔ کچی سڑکوں کو بھاری اور پکی سڑکوں کو جزوی نقصان کا اندیشہ ہے۔

 دھان، موز، پیپا اور دیگر فصلوں کو بھی نقصان ہوگا۔ سمندر میں اونچی لہریں اٹھنے کے سبب نشیبی علاقوں میں پانی داخل ہونے کا بھی امکان ہے۔ آندھرا پردیش کے چیف منسٹر جگن موہن ریڈی نے طوفان گل آب کے پیش نظر تیاریوں کا جائزہ لیا اور عہدیداروں کو الرٹ رہنے اور تمام تر ضروری اقدامات کرنے کی ہدایت دی۔

عہدیداروں نے چیف منسٹر کو بتایا کہ اضلاع کے کلکٹرس اور دیگراعلیٰ عہدیداروں کو الرٹ رہنے کا حکم دے دیا گیا ہے۔ ولیج سکریٹریٹ سطح پر کنٹرول رومس قائم کئے گئے ہیں۔ سریکا کولم اور وشاکھا پٹنم اضلاع میں ڈیزاسٹر مینجمنٹ اسٹاف کو تیار رکھا گیا ہے۔ ضلع کلکٹرس درکار مقامات پر ریلیف کیمپس قائم کررہے ہیں۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.