چندرا بابو نائیڈو سے اظہار یگانگت سینکڑوں کارکن، منگل گیری پہنچے

تلگودیشم پارٹی کے قائدین نے الزام عائد کیا کہ پولیس کی جانب سے ٹریفک تحدیدات عائد کرنے کی وجہ سے پارٹی کارکنوں کو بہت دور گاڑیاں پارک کرتے ہوئے پیدل چل کر پارٹی آفس آنے پر مجبور کیا گیا۔

امراوتی: آندھرا پردیش کے مختلف مقامات سے تلگودیشم پارٹی کے قائدین اور کارکن بڑی تعداد میں منگل گیری میں پارٹی ہیڈ کوارٹرس پہنچ گئے جہاں پارٹی سربراہ چندرا بابو نائیڈو کی36 گھنٹوں کی بھوک ہڑتال جاری ہے۔

منگل کے روز پارٹی ہیڈ کوارٹر اور دیگر مقامات پر پارٹی دفاتر پر حملوں کے خلاف نائیڈو، جمعرات کی صبح 8 بجے سے بھوک ہڑتال کررہے ہیں۔

پارٹی صدر نائیڈو کی بھوک ہڑتال سے اظہار یگانگت کرتے ہوئے ٹی ڈی پی کے قائدین اور کارکنوں کی بڑی تعداد منگل گیری پہنچی۔

تلگودیشم پارٹی کے قائدین نے الزام عائد کیا کہ پولیس کی جانب سے ٹریفک تحدیدات عائد کرنے کی وجہ سے پارٹی کارکنوں کو بہت دور گاڑیاں پارک کرتے ہوئے پیدل چل کر پارٹی آفس آنے پر مجبور کیا گیا۔

نائیڈو نے 36گھنٹوں کی بھوک ہڑتال کل سے شروع اور ہڑتال کے مقام پر ہی انہوں نے شب بسری کی۔ نائیڈو کے بیٹھنے کیلئے خصوصی صوفہ تیار کیا گیا ہے۔اس صوفہ پر بیٹھ کر نائیڈو، اپنے دونوں ہاتھ جوڑ کر پارٹی کارکنوں کی اپیل پر ردعمل کااظہار کررہے تھے۔

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.