بانسواڑہ ماب لنچنگ، جمیعت علماء کی نمائندگی پر پولیس کو ہائی کورٹ کا نوٹس

اس سلسلہ میں مقامی پولیس پٹلم و بچکندہ نے ایف آئی آر نمبر 105/21 اور ایف آئی آر نمبر 110/21 دفعہ 304A  کے تحت مقدمہ درج کیا تاہم تحقیقات میں پہلو تہی کرتے ہوئے حقائق کو چھپانے کی کوشش کی گئی۔

حیدرآباد: حافظ پیر خلیق احمد صابر جنرل سیکرٹری جمعیت علماء تلنگانہ و آندھراپردیش کی اطلاع کے بموجب تلنگانہ کے پہلے ماب لنچنگ واقعہ میں جمیعت علماء تلنگانہ و اے پی کی کوششوں کے بعد ریاستی ہائی کورٹ نے پولیس کو نوٹس جاری کی ہے۔

واضح ہوکہ ضلع کاماریڈی کے تعلقہ بانسواڑہ کے موضع پولکل میں 26 جولائی کو گئورکشک تنظیم نے نہتے عبدالعزیز اور رجب علی قریشی کو ایک منصوبے کے تحت بے دردی سے مارپیٹ کرتے ہوئے رجب علی قریشی کا قتل کر ڈالا اور عبدالعزیز کو شدید زخمی کرتے ہوئے انہیں بے ہوش کردیا تھا۔ اس کے بعد ایک سازش کے تحت قریب کے برج پر ان کی بائیک اور لاش منتقل کرتے ہوئے اسے ایک حادثے کی شکل دینے کی کوشش کی گئی۔

اس سلسلہ میں مقامی پولیس پٹلم و بچکندہ نے ایف آئی آر نمبر 105/21 اور ایف آئی آر نمبر 110/21 دفعہ 304A  کے تحت مقدمہ درج کیا تاہم تحقیقات میں پہلو تہی کرتے ہوئے حقائق کو چھپانے کی کوشش کی گئی۔

عبدالعزیز کے ہوش میں آنے کے بعد تفصیلات اور حقائق سامنے آئے جس پر جمیعت علماء تلنگانہ و آندھراپردیش نے اپنے مقامی ساتھیوں کے ساتھ نمائندگی کرتے ہوئے کاماریڈی سپرنڈنٹ آف پولیس سے مطالبہ کیا کہ مقدمہ کی دفعات تبدیل کرتے ہوئے اسے 302 میں تبدیل کیا جائے اور رجب علی قریشی مرحوم کے ساتھ انصاف کیا جائے۔ اس کے ساتھ خود ساختہ گئورکشکوں (خاطیوں) کو سزا دلائی جائے تاکہ آئندہ ایسے واقعات رونما نہ ہوں۔

حکومت تلنگانہ سے پرزور مطالبہ کیا گیا کہ اس کیس کی غیرجانبدارانہ تحقیقات کرائی جائے۔ لیکن پولیس کی جانب سے کوئی اقدام نہ کئے جانے پر مجبوراً جمعیت علماء تلنگانہ و آندھراپردیش کے جنرل سیکریٹری پیر خلیق احمد صابر نے اہلیہ مرحوم رجب علی قریشی ریشما بیگم کی جانب سے ہائی کورٹ آف تلنگانہ میں ایک رٹ پٹیشن (WP 20220/2021) بذریعہ مجیب احمد ایڈوکیٹ حیدرآباد داخل کی تاکہ متاثرین کو انصاف دلایا جا سکے۔

کورٹ نے معاملہ کی سماعت کے بعد پولیس کو نوٹس جاری کی ہے۔ امید کہ خاطیوں کو سخت سزا ملے گی۔

مسلمانان تلنگانہ بالخصوص بانسواڑہ و کاماریڈی کی جانب سے جمعیت علماء  تلنگانہ و آندھرا کی موثر نمائندگی پر ستائش کرتے ہوئے اظہار تشکر کیا گیا ہے۔ جمیعت ہمیشہ مظلوموں کی بروقت اور کامیاب نمائندگی کے لیے تیار رہتی ہے بلکہ جو احباب بھی اس میں تعاون کر رہے ہیں ان کے حق میں ہم دعا گو ہیں کہ اللہ ان کو جزائے خیر دے۔

تبصرہ کریں

یہ بھی دیکھیں
بند کریں
Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.