تلنگانہ میں سیاسی جماعتوں نے ’یوم انضمام تلنگانہ‘ منایا

ملٹری آپریشن ”پولو“ جس کو پولیس ایکشن بھی کہا جاتا ہے، کے بعد17 ستمبر 1948 کو ریاست حیدرآباد کے آخر ی فرمانرواں نواب میر عثمان علی خان بہادر آصف سابع نے اپنی ریاست کو انڈین یونین میں ضم کرنے کا اعلان کیا۔

حیدرآباد: ریاست میں آج سیاسی جماعتوں نے یوم انضمام تلنگانہ کا اہتمام کرتے ہوئے اُن مجاہدین آزادی کو خراج پیش کیا۔

 جنہوں نے حیدرآباد اسٹیٹ کو انڈین یونین میں ضم کرنے کی جدوجہد کے دوران اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کیا تھا۔

تلنگانہ کی حکمراں جماعت ٹی آر ایس اور اپوزیشن جماعتوں نے جمعہ کے روز پارٹی دفاتر پر ترنگا لہرایا۔

ملٹری آپریشن ”پولو“ جس کو پولیس ایکشن بھی کہا جاتا ہے، کے بعد17 ستمبر 1948 کو ریاست حیدرآباد کے آخر ی فرمانرواں نواب میر عثمان علی خان بہادر آصف سابع نے اپنی ریاست کو انڈین یونین میں ضم کرنے کا اعلان کیا۔

ٹی آ رایس کے سکریٹری جنرل ڈاکٹر کے کیشوراو کی صدارت میں پارٹی کے صدر دفتر تلنگانہ بھون پر ترنگا لہرایا گیا۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کیشو راؤ نے کہا کہ17 ستمبر پر  تنازعہ پیدا کرنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔

 اس دن کو آپ یوم نجات یا پھر یو انضمام قرار دیں تاہم یہ دن ہمارے سب کے لئے خوشی کا دن ہے۔

ٹی آر ایس کے رکن پارلیمنٹ نے یاد دلایا کہ تلنگانہ اور سابق ریاست حیدرآباد کے دیگر مقامات پر15/ اگست1947 کو آزادی نہیں ملی۔ ان علاقوں کے عوام کو آزادی کیلئے مزید ایک سال تک انتظار کرنا پڑا۔

بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) جوہر سال 17 ستمبر کو تلنگانہ لبریشن ڈے مناتی ہے، نے حکومت سے سرکاری سطح پر یوم نجات منانے کا مطالبہ کیا ہے۔

 تاہم متحدہ آندھرا پردیش کی حکومتوں اور تشکیل تلنگانہ کے بعد والی حکومت نے بھی بی جے پی کے اس مطالبہ کو مسترد کردیا اور الزام عائد کیا کہ بی جے پی، اس موضوع پر سیاست کرتے ہوئے یوم انضمام کو فرقہ وارانہ رنگ دینے کی کوشش کررہی ہے۔

مرکزی وزیر جی کشن ریڈی نے آج پارٹی کے ریاستی صدر دفتر پر ترنگا لہرایا اور انہوں نے چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ سے 17 ستمبر کو یوم نجات کے طور پر منانے سے متعلق اپنے وعدہ کو پورا کرنے کا مطالبہ کیا۔

علیحدہ تلنگانہ تحریک کے دوران کے سی آر نے تشکیل تلنگانہ کے بعد سرکاری سطح پر 17 ستمبر کو یوم نجات منانے کا وعدہ کیا تھا۔

بی جے پی قائد کے لکشمن نے الزام عائد کیا کہ ٹی آر ایس حکومت، مجلس کی کٹھ پتلی بنی ہوئی ہے۔ بی جے پی کے ریاستی صدر بنڈی سنجے جو پرجاسنگرام یاترا میں مصروف ہیں، نے کاماریڈی ٹاؤن میں سردار ولبھ بھائی پٹیل کے مجسمہ پر پھول چڑھائے۔

تلنگانہ پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر اے ریونت ریڈی نے پارٹی آفس گاندھی بھون پر ترنگا لہرایا انہوں نے گاندھی جی، نہرو اور پٹیل کے پورٹریٹس پر پھول چڑھائے۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ریونت ریڈی نے کہا کہ کانگریس پارٹی نے ہی، ملک کو انگریزوں کی غلامی سے آزادی دلائی۔

انہوں نے کہا کہ جواہر لال نہرو کی مساعی سے ہی تلنگانہ، انڈین یونین کا حصہ بن پایا۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی کے ایک بھی قائد نے تحریک آزادی میں حصہ نہیں لیا۔

انہوں نے الزام عائد کیا کہ سیاسی مفاد کیلئے بی جے پی، کانگریس قائدین کے ناموں کا استعمال کرتی ہے۔ تلگودیشم پارٹی (ٹی ڈی پی)، سی پی آئی اور تلنگانہ جنا سمیتی (ٹی جے ایس) نے بھی یوم انضمام تلنگانہ کا اہتمام کیا اور اپنے دفاتر پر قومی پرچم لہرایا۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.