تلنگانہ میں ڈینگو کے بڑھتے واقعات کی اسمبلی میں گونج

نیلوفر اسپتال میں ڈینگو کے کئی معاملات سامنے آرہے ہیں اور فیوراسپتال میں مریضوں کے لئے گنجائش نہیں رہی ہے۔

حیدرآباد: اکبر الدین اویسی فلورلیڈرمجلس تلنگانہ مقننہ پارٹی کی جانب سے ریاستی اسمبلی میں ڈینگو کے بڑھتے معاملات کا مسئلہ اٹھایاگیا۔انہوں نے کہا کہ دس ستمبر تک ڈینگو کے 3144 معاملات کا پتہ چلا ہے۔ انہوں نے وزیر خزانہ سے درخواست کہ نیلوفر اور فیوراسپتال کا دورہ کریں۔

نیلوفر اسپتال میں ڈینگو کے کئی معاملات سامنے آرہے ہیں اور فیوراسپتال میں مریضوں کے لئے گنجائش نہیں رہی ہے۔

ساتھ ہی انہوں نے زور دیتے ہوئے کہا کہ ڈینگو سے لڑنے کیلئے اسٹاف‘پڈیاٹرک ونٹی لیٹر اور سی پیک مشینوں کے ساتھ ساتھ ڈینگو اورملیریا کیلئے مزید جانچ کے کٹس کی ضرورت ہے۔

انہوں نے کہا کہ کئی پرائیویٹ اسپتال آروگیہ شری کے تحت مریضوں کو اسپتال میں لینے سے انکار کررہے ہیں کیونکہ حکومت کی جانب سے کروڑہاروپئے ان اسپتالوں کو واجب الادا ہیں۔آروگیہ شری کی اسکیم کو مرکز کی آیوشمان بھارت کو مربوط کردیاگیا ہے اس پروسیع تشہیر کی ضرورت ہے۔

حکومت کی جانب سے پرائیویٹ اسپتالوں کو واضح ہدایت دی جائے کہ آروگیہ شری زمرہ کے تحت مریضوں کو اسپتالوں میں لینے سے گریز نہ کریں۔ اکبراویسی کے اس مطالبہ پر وزیر ہریش راو نے تمام عہدیداروں کو ہدایت دی کہ فوری طورپر ان اسپتالوں کا دورہ کرتے ہوئے درکار اقدامات کریں۔ضرورت پڑنے پر وہ بھی ا ن کے ساتھ ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ اسپتالوں میں خالی ملازمتوں کو عارضی طورپر فوری پُرکرنے کیلئے چیف منسٹر نے کلکٹرس کو ہدایت دی ہے۔انہوں نے کہا کہ آروگیہ شری کے زیرالتوا بلز کے تحت 4138کروڑروپئے کی رقومات ادا کی گئی ہیں۔آروگیہ شری کے تحت 160کروڑ روپئے کے بلز ہی واجب الادا ہیں۔اس کا بھی جائزہ لیاجائے گا۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.