تلنگانہ کے ساتھ مرکز کاامتیازی رویہ: کے سی آر

کے چندر شیکھرراؤ نے کہاکہ متحدہ آندھراپردیش میں 58سالوں تک تلنگانہ کو نظرانداز کیاگیا۔یہاں کی تہذیب کو پس پشت ڈال دیاگیا۔سیاحت کوفروغ نہیں دیا گیا۔

حیدرآباد: چیف منسٹرکے چندرشیکھرراؤ نے مرکزی حکومت پر تلنگانہ کے ساتھ امتیازی رویہ اختیار کرنے کاالزام عائد کیا۔آج اسمبلی میں وقفہ سوالات کے دوران خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ بشمول سیاحت دیگر شعبوں میں مرکز تلنگانہ کے ساتھ مسلسل ناانصافی کرتا آرہاہے۔

چیف منسٹرنے کہاکہ تلنگانہ روشن تہذیب وتمدن کی حامل ریاست ہے یہاں کی روایات ملک بھر کے لئے مثالی ہیں۔ کے چندر شیکھرراؤ نے مزید کہاکہ متحدہ آندھراپردیش میں 58سالوں تک تلنگانہ کو نظرانداز کیاگیا۔یہاں کی تہذیب کو پس پشت ڈال دیاگیا۔سیاحت کوفروغ نہیں دیا گیا۔

یہاں کئی آبشارہیں جن کونظرانداز کیاگیا‘ کھمم میں پانڈاولہ گٹہ‘دوم کونڈاقلعہ کو ترقی نہیں دی گئی‘مرکزی حکومت نے بھی انصاف نہیں کیا۔کے سی آرنے کہاکہ تشکیل تلنگانہ کے بعد حالات میں بہتری آرہی ہے۔منصوبہ بندطریقہ سے سیاحت کوفروغ دیاجارہا ہے‘ اختراعی نظریات اختیارکئے جارہے ہیں۔ تاریخی مقامات‘قلعوں‘مذہبی مقامات‘ منادر کوترقی دیتے ہوئے ملکی اورعالمی سطح پرتشہیر کی جارہی ہے۔

کے سی آرنے کہاکہ ریاست کوہوائی راستہ سے ملک کو جوڑ نے کے لئے چھ ائیرپورٹس قائم کرنے کی اپیل کی تھی مگر مرکزی حکومت اس موضوع پربھی وقت گزاری کامظاہرہ کررہی ہے۔پی ٹی آئی کے مطابق چیف منسٹرکے چندرشیکھرراؤ نے آج کہاکہ حکومت تلنگانہ سیاحتی وتاریخی مقامات کو بڑے پیمانے پر فروغ دینے کے لئے مختلف اقدامات کرے گی ان میں تاریخی مقامات اور سیاحتی مراکز کوفروغ دینے کے لئے ارکان اسمبلی پر مشتمل ایک کمیٹی تشکیل دینابھی شامل ہے۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.