حضورآباد الیکشن: ووٹرس میں الجھن پیدا کرنے نیا سیاسی حربہ

بتایاجاتا ہے کہ آل انڈیا بی سی، او بی سی پارٹی کے امیدوار ایپالا پلی راجندر، نیوانڈیا پارٹی کے امیدوار اسم پلی راجندر، اور ریپبلکن پارٹی آف انڈیا کے امیدوار ایماڈی راجندر نے پرچہ نامزدگی داخل کیا ہے۔

حیدرآباد: حلقہ اسمبلی حضورآباد کے ضمنی انتخاب جو ہرسیاسی جماعت کے لئے وقار کا مسئلہ بن گیا ہے، میں ایک نیاسیاسی رجحان ابھرکرسامنے آرہا ہے۔ حضورآباد ٹاؤن میں ہرجگہ رائے دہندوں کو تذبذب کا شکاربنانے اور کراس ووٹنگ موضوع بحث بنی ہوئی ہے۔

سابق وزیر و 6بار ایم ایل اے منتخب ایٹالہ راجندر جنہیں بی جے پی نے امیدوار بنایا ہے، حضورآباد حلقہ میں ایک مقبول عام قائد ہیں۔ ای راجندر کی عوامی مقبولیت کو مدنظررکھتے ہوئے چند سیاسی جماعتوں نے جو سابق وزیر کے ناقد ہیں، دیگر اضلاع سے راجندر کے نام سے کئی امیدواروں کو حلقہ حضورآباد لایا ہے اور ان سے پرچہ نامزدگی داخل کرایا ہے۔

جن چندامیدواروں نے پرچہ نامزدگیاں داخل کی ہیں ان کے نام، بی جے پی امیدوار ای راجندر کے نام سے متشابہ ہیں۔

بتایاجاتا ہے کہ آل انڈیا بی سی، او بی سی پارٹی کے امیدوار ایپالا پلی راجندر، نیوانڈیا پارٹی کے امیدوار اسم پلی راجندر، اور ریپبلکن پارٹی آف انڈیا کے امیدوار ایماڈی راجندر نے پرچہ نامزدگی داخل کیا ہے۔

ان تینوں امیدوار کے نام راجندر ہیں جبکہ ایٹالہ راجندربھی میدان میں ہیں۔ ایپاپلی‘ اسم پلی اور ایماڈی پلی راجندر کے نام کے امیدواروں کی انتخابی میدان میں موجودگی سے رائے دہندوں میں الجھن پیدا ہوگی اور بڑے پیمانہ پر کراس ووٹنگ کے امکان کو مستردبھی نہیں کیاجاسکتا۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.