حکومت، سکریٹریٹ کی مساجد کی تعمیر کے عہد پر قائم : کے ٹی آر

کورونا وائرس کی وباء اور دیگر اسباب کی وجہ سے اعلان کردہ تاریخ میں مساجد کے بشمول چرچ اور مندر کا سنگ بنیادنہیں رکھاجاسکا۔تاہم حکومت‘2مساجد‘مندراورچرچ کی تعمیر کے وعدہ پربدستورقائم ہے۔

حیدرآباد: ریاستی وزیر بلدی نظم ونسق وشہری ترقیات کے تارک راماراؤ نے آج اسمبلی میں وعدہ کیا کہ حکومت‘سکریٹریٹ میں شہیدکردہ دو مساجد کودوبارہ تعمیر کرانے کے لئے کوشاں ہے اور نئے سکریٹریٹ میں منہدم کردہ مندر کے ساتھ چرچ بھی تعمیر کیاجائے گا۔

ایوان میں ریاست میں اقلیتی بہبوداورپرانے شہر حیدرآبادمیں ترقیاتی سرگرمیوں کے موضوع پر مختصر مباحث کے دوران مجلس کے فلور لیڈر اکبرالدین اویسی‘کانگریس کے فلور لیڈر بھٹی وکرامارکہ اور بی جے پی کے رکن راجہ سنگھ کے سوال کی وضاحت کرتے ہوئے ریاستی وزیر کے ٹی آرنے اس بات کااعتراف کیا کہ سکریٹریٹ کے احاطہ میں دومساجد کے ساتھ دیگر مذہبی مقامات کے تعمیری کاموں کے سنگ بنیادرکھنے میں تاخیرہورہی ہے۔

کورونا وائرس کی وباء اور دیگر اسباب کی وجہ سے اعلان کردہ تاریخ میں مساجد کے بشمول چرچ اور مندر کا سنگ بنیادنہیں رکھاجاسکا۔تاہم حکومت‘2مساجد‘مندراورچرچ کی تعمیر کے وعدہ پربدستورقائم ہے۔

سنگ بنیادرکھنے کی تاریخ کا عنقریب اعلان کیاجائے گا۔ انہوں نے اس بات کی یقین دہانی کرائی کہ تینوں مذہبی مقامات کاسنگ بنیادایک دن میں ایک ساتھ رکھاجائے گاتاہم اس کاموزوں مناسب وقت پر اعلان کیاجائے گا۔ اکبر الدین اویسی نے لال دروازہ کی مہانکالی مندرکی توسیع‘افضل گنج کی مسجد کی تزئین نو کے علاوہ ان کے حلقہ کے شیواجی نگرکی ٹمپل میں کلیان منڈپ کی تعمیر کا مسئلہ اٹھایا۔

اویسی نے اس کے لئے 2ہزار گز قطعہ اراضی کی فراہمی کا تیقن دیا۔اویسی کے سوال کا جواب دیتے ہوئے کے ٹی آر نے کہاکہ لال دروازہ کی مندر کی توسیعی کے لئے 5املاک کاحصول ضروری ہے ان میں سے ایک پراپرٹی کامالک یہاں سے جانے کے لئے تیارہے مگر مابقی 4 افراد اپنی پراپرٹی حوالے کرنے سے گریز کررہے ہیں جس پر اکبرالدین اویسی نے مداخلت کرتے ہوئے کہاکہ وہ مالکان پراپرٹی سے بات کریں گے۔

اس بات چیت میں وزیر افزائش مویشیان ٹی سرینواس یادو بھی رہیں گے اورہم دونوں اس معاملہ کوسلجھانے کی ممکنہ سعی کریں گے۔ریاستی وزیر کے ٹی آر نے دعویٰ کیا کہ چیف منسٹر کے سی آر نے مندر کی توسیعی کے لئے 10 کروڑ روپے منظور کئے ہیں۔اسی طرح چیف منسٹرنے افضل گنج کی مسجد کی تزئین نوکے لئے 3کروڑ روپے کی منظوری دی ہے۔تزئین نوکے کام بہت جلد شروع ہوں گے۔

انہوں نے شیواجی نگر کی مندر میں کلیان منڈپ کی تعمیر کے لئے 2 ہزار گز قطعہ اراضی فراہم کرنے کے اعلان پر اکبر الدین اویسی کی ستائش کی اور انہوں نے یقین دہانی کرائی کہ حکومت‘منڈپ کے کام شروع کردے گی۔ریاستی وزیر کے تارک راماراؤ نے مزید کہاکہ ایم ایم ٹی ایس کے دوسرے مرحلہ کے پراجکٹ کو فلک نما سے شمس آباد تک توسیع کی جائے گی تاہم وہ چیف منسٹر کے سی آر سے نمائندگی کرتے ہوئے اس پراجکٹ کے لئے بجٹ مختص کرنے کی خواہش کریں گے۔

انہوں نے بنڈلہ گوڑہ میں رجسٹریشن آفس اور آرٹی اے آفس کے قیام کی مساعی انجام دینے کا تیقن دیااورفلک نما میں فٹ بال اسٹیڈیم بھی تعمیر کیاجائے گا۔راجہ سنگھ نے ایوان میں وزیر کے ٹی آر کوایک مکتوب حوالے کرتے ہوئے موسیٰ ندی کی صفائی اورعثمانیہ ہاسپٹل کی دوبارہ تعمیرپرزوردیاکیونکہ ہاسپٹل کی عمارت کی حالت انتہائی خستہ ہے۔

سنگھ نے کہاکہ عثمانیہ جنرل ہاسپٹل کامعاملہ ان کے حلقہ سے تعلق رکھتا ہے اوریہ ہاسپٹل پرانے شہر کے عوام کیلئے انتہائی فائدہ مندر ہے۔ اس علاقہ کے غریب عوام کی بڑی تعداد کا انحصار اس بڑے عوامی دواخانہ پر ہے۔ انہوں نے کہاکہ مجھے ابھی تک یہ نہیں معلوم ہوا کہ پرانے شہر میں حیدرآبادمیٹروریل کی کون مخالفت کررہا ہے یہ پراجکٹ پرانے شہر کے لئے انتہائی اہمیت کاحامل رہے گا۔

انہوں نے شراب کی فروخت سے کناراکشی اختیار کرچکے دھول پیٹ کے افرادکی بازآبادکاری کا معاملہ بھی اٹھایاجس پرکے ٹی آر نے انہیں ان سے ملنے کوکہااورکہاکہ حکومت‘ اپوزیشن کے ارکان اسمبلی کے حلقہ جات سے جانبداری نہیں برتے گی۔ریاستی وزیر کے ٹی آرنے مزید کہا کہ تشکیل تلنگانہ کے بعد 7برسوں میں حکومت نے پرانے شہر کے 8اسمبلی حلقوں میں مختلف ترقیاتی سرگرمیوں پر جملہ 14,887 کروڑروپے خرچ کئے ہیں ان میں راجہ سنگھ کا حلقہ بھی شامل ہے۔

انہوں نے کہاکہ چارمینارپیدل راہ روپراجکٹ کے کام جاری ہیں‘چارمینارکوخوبصورت بنانے کے پراجکٹ پر اب تک 33کروڑروپے خرچ ہوچکے ہیں ضرورت پڑنے پرحکومت مزید ایک سو سے 150 کروڑ روپے خرچ کرنے تیار ہے۔ چیف منسٹرکے فرزند نے یقین دہانی کرائی کہ حکومت قلی قطب شاہ اربن ڈیولپمنٹ اتھاریٹی کااحیاکرے گی اور ایس آر ڈی پی کے تحت پرانے شہر سے مربوط تمام کام ہاوزنگ اسکیم‘ نالوں کی صفائی‘آبرسانی نظم کوباقاعدہ بنانے اور ڈرین سسٹم کومستحکم بنانے کے کام‘ اس ادارہ کی جانب سے انجام دی جائیں گی اور اتھاریٹی کو معقول فنڈس جاری کرے گی تاکہ یہ ادارہ بہتر اندازمیں کام کرسکے۔

کورونا وائرس کی وباء سے اسمال اسٹریٹ وینڈرس کے جان کے لالے پڑگئے۔ان پھیری لگا کر کاروبارکرنے والے چھوٹے تاجروں کی نشاندہی کی گئی ان کی تعداد35ہزار کے قریب ہے۔انہیں حکومت کی جانب سے سود سے پاک10ہزارروپے کاقرض فراہم کیاجائے گا۔اکبراویسی نے کہاکہ ان کے سیاسی کیرئیر میں پہلی بار اسمبلی میں پرانے شہر پر مباحث ہورہے ہیں جوانہتائی مسرت وخوشی کی بات ہے۔

وزیرکے ٹی آر نے کہاکہ وہ پرانے شہر کی ترقی پرمباحث پر اس لئے تیار ہوئے ہیں کہ حکومت نے گذشتہ 7برسوں کے دوران پرانے شہرمیں کئی ترقیاتی کام انجام دیئے ہیں۔عوام کوبھی یہ معلوم ہوناچاہئے کہ تشکیل تلنگانہ کے بعدٹی آرایس حکومت نے پرانے شہر میں کونے ترقیاتی کام انجام دیئے ہیں۔انہوں نے کہاکہ وہ6اکتوبرکوپرانے شہر کے ارکان اسمبلی کااجلاس طلب کریں گے جس میں شہرحیدرآبادکی ترقی پر تفصیلی طورپرتبادلہ خیال کریں گے۔کے ٹی آر نے سی ایل پی قائد بھٹی وکرامارکہ کواس اجلاس میں شرکت کی دعوت دی۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.