دلت بندھو اسکیم پر اپوزیشن کے خدشات غیر ضروری : کے سی آر

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کے سی آر نے اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے دلت بندھو اسکیم پر عمل آوری سے متعلق کئے جارہے ہیں شکوک وشبہات کو غلط قرار دیا۔

حیدرآباد: چیف منسٹر کے چندرشیکھر راؤ نے آج کہا کہ دلتوں کی معاشی وسماجی حالت بہتر بنانے کیلئے حکومت نے دلت بندھو اسکیم کا آغاز کیا ہے۔ اسی اسکیم سے بلا لحاظ سیاسی وابستگی تمام دلتوں کو فی خاندان 10لاکھ روپئے کی رقم مہیا کی جائے گی۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کے سی آر نے اپوزیشن جماعتوں کی جانب سے دلت بندھو اسکیم پر عمل آوری سے متعلق کئے جارہے ہیں شکوک وشبہات کو غلط قرار دیا۔

سی جے پی کے قائد وسابق وزیر متحدہ آندھراپردیش این نرسمہلو نے آج ٹی آر ایس میں شمولیت اختیار کرلی۔ چیف منسٹر کے چندرشیکھر راؤ نے تلنگانہ بھون میں ایم نرسمہلوکا خیر مقدم کیا اور انہیں پارٹی کا کھنڈوا پہنا کر ٹی آر ایس میں شامل کرلیا۔

انہوں نے کہا کہ دلت بندھو اسکیم کے آغاز سے قبل تمام سیاسی جماعتوں کے قائدین سے دلتوں کے معاشی مسائل حل کرنے سے متعلق غور وخوص کیا گیا تھا۔ انہوں نے بذریعہ فون ایم نرسمہلو کو اس اجلاس میں شرکت کرنے کا مشورہ دیا تھا جس پر انہوں نے اس اجلاس میں شرکت کی تھی۔

انہوں نے کہا کہ صدیوں سے دلت بھائی غریب ہیں۔ سابق تلگودیشم اور کانگریس کے دور حکومت میں دلتوں کے مسائل حل کرنے کیلئے کوئی اقدامات نہیں کئے گئے۔ انہوں نے کہا کہ تحفظات کے ذریعہ صرف تعلیم یافتہ دلتوں کو سرکاری ملازمتوں کے مواقع حاصل ہوئے جبکہ غیر تعلیم یافتہ غریب دلتوں کو تحفظات کے ذریعہ کوئی فائدہ نہیں پہونچا۔

انہوں نے کہا کہ تلنگانہ کے تمام اضلاع میں دلت بندھو اسکیم کو نافذ کریں گے۔ ایک دلت خاندان کو 9لاکھ 90ہزار روپئے دئیے جائیں گے۔ 10ہزار روپئے کی رقم حکومت کے پاس رہے گی۔ تمام جمع رقم حادثہ میں فوت ہوجانے پر مذکورہ دلت خاندان کو دی جائے گی۔

انہوں نے کہاے کہ ایم نرسمہلو سے ان کے قدیم روابط ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دیگر طبقات میں بھی غریب ہیں حکومت ان طبقات کیلئے بھی فلاحی اسکیم کا آغاز کرے گی۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.