سپریم کورٹ میں تلنگانہ کی عرضی پر 16 ستمبر کو سماعت

پہلے چیف جسٹس کی بنچ پر اس خصوصی عرضی کی سماعت کی جائے گی اور بعد میں چیف جسٹس اس مسئلہ کو مخصوص جج کے حوالہ کریں گے جہاں ریاستی  حکومت کے موقف اور حالات پر سماعت کی جائے گی اور عبوری احکامات جاری کئے جانے کا امکان ہے۔

حیدرآباد: ملک کی اعلیٰ ترین عدالت سپریم کورٹ میں حکومت تلنگانہ کی جانب سے داخل کردہ ایس ایل پی (اسپیشل لیوپٹیشن) جو ہائی کورٹ کے فیصلہ کے خلاف جس میں حسین ساگر میں پلاسٹر آف پیپرس (پی او پی) سے بنی گنیش مورتیوں کے وسرجن پر پابندی عائد کردی گئی، پر16 ستمبر کو سماعت ہوگی۔

ذرائع کے مطابق ریاستی حکومت کی جانب سے اس مقدمہ کی پیروی کے لئے سینئر وکیل کی خدمات حاصل کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

پہلے چیف جسٹس کی بنچ پر اس خصوصی عرضی کی سماعت کی جائے گی اور بعد میں چیف جسٹس اس مسئلہ کو مخصوص جج کے حوالہ کریں گے جہاں ریاستی  حکومت کے موقف اور حالات پر سماعت کی جائے گی اور عبوری احکامات جاری کئے جانے کا امکان ہے۔

واضح رہے کہ 9ستمبر کو تلنگانہ ہائی کورٹ نے احکامات جاری کرتے ہوئے حسین ساگر میں پی او پی سے بنی گنیش مورتیوں کے وسرجن پر پابندی عائد کردی تھی۔

حکومت کی جانب سے اس فیصلہ کے خلاف نظر ثانی کی اپیل دائر کی گئی تھی جس کو مسترد کردیا گیا تھا جس کے بعد گذشتہ روز حکومت نے ہائی کورٹ کے فیصلہ کو چیالنج کرتے ہوئے سپریم کورٹ سے رجوع ہوئی تھی۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.