ضمنی الیکشن، ہریش راؤ اور ای راجندر کے درمیان جنگ میں تبدیل

ہریش راؤ کی جانب سے ہرانتخابی جلسہ کے دوران یہ بتانے کی کوشش کی جارہی ہے کہ ای راجندرکی کوشش عزت نفس کی برقراری کے لئے نہیں بلکہ اپنے جائیدادوں اور دولت کے تحفظ کیلئے ہے۔

حیدرآباد: حلقہ اسمبلی حضورآباد کا ضمنی الیکشن ٹی ہریش راؤ اور ای راجندر کے درمیان جنگ میں تبدیل ہوگیا ہے۔ اگرچیکہ ٹی آرایس کی جانب سے جی سرینواس کو اُمیدوار بنایاگیا ہے مگر پارٹی کے سینئر قائد وریاستی وزیر ٹی ہریش راؤ اور بی جے پی امیدوار ای راجندر کے درمیان لفظی جنگ چھڑگئی ہے۔

ہریش راؤ جو حضورآباد میں کیمپ کئے ہوئے ہیں، ہر منڈل کادورہ کرتے ہوئے عوام سے ملاقات کررہے ہیں اور عوام کو تیقن دے رہے ہیں کہ جی سرینواس کو کامیاب بنانے کی صورت میں وہ ہر 15 دن میں ایک بار حضورآباد کا درہ کرتے ہوئے عوام کو درپیش مسائل حل کریں گے۔

ای راجندر پر شخصی تنقید کرتے ہوئے عوام میں کے سی آر اور ٹی آرایس کی ہمدردی میں اضافہ کرنے کی کوشش کررہے ہیں۔

ہریش راؤ باربار یہ کہہ رہے ہیں کہ کے چندرشیکھرراؤ نے ای راجندر کے ساتھ سگے بھائی جیسا برتاؤ کیا تھا انہیں کابینہ میں شامل کیاتھا اور پارٹی میں اعلیٰ عہدہ پر فائز کیاتھا مگر ای راجندر نے احسان فراموشی کا مظاہرہ کیا اور ایک ایسی سیاسی جماعت بی جے پی میں شامل ہوگئے جس نے عوام کیلئے کبھی کچھ نہیں کیا۔

اس جماعت نے الٹا پٹرول‘ ڈیزل، پکوان گیس کی قیمتوں میں اضافہ کرتے ہوئے عوام کی زندگیوں کو اجیرن بنادیا۔

دوسری طرف کے سی آر کی جانب سے غریب عوام کیلئے آسرا پنشن، کے سی آر کٹس‘ رعیتوبندھو‘ رعیتوبیمہ اسکیموں کا آغازکرتے ہوئے زیادہ سے زیادہ فائدہ پہنچایاجارہا ہے۔

ہریش راؤ کی جانب سے ہرانتخابی جلسہ کے دوران یہ بتانے کی کوشش کی جارہی ہے کہ ای راجندرکی کوشش عزت نفس کی برقراری کے لئے نہیں بلکہ اپنے جائیدادوں اور دولت کے تحفظ کیلئے ہے۔

ای راجندر200 ایکراراضی کے مالک ہیں اور ٹی آرایس امیدوار جی سرینواس کے پاس صرف دوگنٹہ اراضی ہے۔ عوام کو دونوں امیدواروں کے درمیان سوجھ بوجھ کا مظاہرہ کرتے ہوئے انتخاب کرنے کی ضرورت ہے۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.