عثمانیہ یونیورسٹی کا 81 واں جلسہ تقسیم اسناد

گورنر ڈاکٹر تمیلی سائی سوندراراجن نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر اے پی جے عبدالکلام کی مثال سامنے رکھنا چاہئے جنہوں نے جوخواب دیکھا تھا اسے پورا کردکھایا۔ آپ کوبھی بلند خواب دیکھناچاہئے مگر ان خوابوں کی تعبیر ہونے تک آپ کونیند نہیں آنی چاہئے۔

 حیدرآباد: ریاستی گورنر ڈاکٹر تمیلی سائی سوندراراجن نے طلبہ اوراسکالرس کواختراعات پرتوجہ دینے کامشورہ دیتے ہوئے کہاکہ ملک کی بہترتبدیلی اورہمہ جہت ترقی میں اخِتراعات کاکلیدی رول رہتا ہے۔

ہمیں تمام سطحوں پر اختراعات کے فروغ کوترجیح دینا چاہئے تاکہ خوانحصارہندوستان کے نشانہ کوحاصل کیاجاسکے۔

ڈاکٹر تمیلی سائی سوندراراجن جوریاست کی تمام یونیورسٹیوں کے چانسلر بھی ہیں، نے آج عثمانیہ یونیورسٹی کے81 ویں کانوکیشن سے بحیثیت چانسلر خطاب کرتے ہوئے یہ بات کہی۔

یہ کانوکیشن، چہارشنبہ کے روزیونیورسٹی  کیمپس کے ٹیگورآڈیٹوریم میں منعقدہوا۔ طلبہ کودرپیش چیالنجس کا سامنا کرنے تیاررہنے کی ترغیب دیتے ہوئے گورنرنے کہاکہ چیالنجس کامقابلہ کرنے سے نئی طاقت ملتی ہے اورہم مضبوط ہوتے ہیں۔

عثمانیہ یونیورسٹی کو صدسالہ قدیم تاریخی جامعہ قراردیتے ہوئے انہوں نے کہاکہ طلبہ اورابنائے قدیم کویونیورسٹی پرفخر ہوناچاہئے اورانہیں یونیورسٹی کی ترقی میں بڑھ چڑھ کرحصہ لیناچاہئے۔ گورنر نے طلبہ پر زوردیاکہ وہ چھوٹے مسائل پر ڈپریشن اورکم ہمتی کا شکارنہ ہوں۔ ہمیں ہمیشہ بلند خواب دیکھناچاہئے۔

ہمیں ڈاکٹر اے پی جے عبدالکلام کی مثال سامنے رکھنا چاہئے جنہوں نے جوخواب دیکھا تھا اسے پورا کردکھایا۔ آپ کوبھی بلند خواب دیکھناچاہئے مگر ان خوابوں کی تعبیر ہونے تک آپ کونیند نہیں آنی چاہئے۔

گورنرڈاکٹر تمیلی سائی سوندراراجن نے کہاہے کہ وہ طلبہ اور اسکالرس سے متاثر ہوئی ہیں جنہوں نے ڈگری اورگولڈمیڈلس حاصل کئے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ ان طلبہ کی زندگی ایک کورے کاغذ کی مانند ہے جس پر آپ اپنی ترقی کے بیش بہا تجربات، کاوشوں کوتحریرکرتے ہوئے تاریخ رقم کرسکتے ہیں۔

انہوں نے طلبہ کوایک اچھے انسان بننے کی تلقین کی۔ صدرنشین ڈی آر ڈی اوڈاکٹر جی ستیش ریڈی، وائس چانسلرعثمانیہ یونیورسٹی پروفیسر ڈی رویندر، میزبان عہدیداراوردیگراہم شخصیات کانوکیشن میں شریک تھیں۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.