چلڈرنس ہاسپٹلس میں انفرااسٹرکچر کو فروغ

تلنگانہ بھر میں سرکاری ہاسپٹلوں میں 27 ہزار پڈیاٹرکس بیڈس کو آکسیجن کی فراہمی کا نظم کیا جارہا ہے۔

حیدرآباد: کورونا وائرس کی امکانی تیسری لہر کے دوران بچوں کے متاثر ہونے سے متعلق ریسرچرس کی پیش قیاسی کو مدنظر رکھتے ہوئے حکومت تلنگانہ نے بڑے پیمانے پر احتیاطی اقدامات شروع کردئیے ہیں ان میں تمام چلڈرنس ہاسپٹلوں میں انفرااسٹرکچر کو بڑھانا بھی شامل ہے۔

اس حصہ کے طور پر ریاست بھر میں سرکاری ہاسپٹلوں میں 27 ہزار پڈیاٹرکس بیڈس کو آکسیجن کی فراہمی کا نظم کیا جارہا ہے۔

کووڈ انفیکشن سے دوچار ہونے والے بچوں کے علاج کیلئے تمام تر طبی سہولتیں فراہم کی جائیں گی۔ امکانی تیسری لہر کو دیکھتے ہوئے حکومت نے پہلے ہی تمام سرکاری دواخانوں جن میں نیلوفر ہاسپٹل بھی شامل ہے، 6ہزار پڈیاٹرکس بیڈس قائم کئے ہیں جبکہ 4ہزار بیڈس 9ٹیچنگ ہاسپٹلس میں تخلیق کے گئے ہیں۔

ڈسٹرکٹ ہاسپٹلس میں 1400 مابقی بیڈس ایریا ہاسپٹلس میں قائم کئے گئے ہیں۔ شہر کے نیلو فر چلڈرنس ہاسپٹل میں خصوصی بلاک کی تعمیر کے کام شروع کردئیے گئے ہیں جس پر 35 کروڑ روپے کا خرچ آئے گا۔

مجوزہ نئے بلاک کی تعمیر سے نیلو فرہاسپٹل میں بیڈس کی تعداد میں مزید 800 کا اضافہ ہوگا سینئر میڈیکل آفیسر نیلوفر ہاسپٹل نے بتایا کہ مجوزہ نئے بلاک میں کووڈ سے متاثر بچوں کا علاج کیا جائے گا۔

وبا کے خاتمہ کے بعد اس بلاک کو عام طبی خدمات کیلئے استعمال کیا جائے گا۔ نئے بلاک میں بھی موجودہ اسٹاف کی خدمات سے استفادہ کیا جائے گا۔ اسٹاف کی تعداد معقول ہے۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.