چندرائن گٹہ قتل واقعہ، 4 حقیقی بھائی گرفتار

قتل کا واقعہ دن دھاڑے دوروزقبل پیش آیاتھا جس میں متذکورہ ملزمین نے زبیدی پر مہلک ہتھیاروں سے حملہ کردیاتھاجس کی وجہ سے زبیدی کوشدیدزخمی حالت میں عثمانیہ جنرل ہاسپٹل منتقل کیاگیاجہاں ڈاکٹروں نے بعد معائنہ انہیں مردہ قراردیاتھا۔

حیدرآباد: چندرائن گٹہ پولیس نے 40سالہ حسن بن علی زبیدی کے قتل کے واقعہ میں ملوث 4 حقیقی بھائیوں کوآج گرفتارکرلیا۔

انسپکٹر چندرائن گٹہ کے این پرسادکے بموجب قتل کا واقعہ دن دھاڑے دوروزقبل پیش آیاتھا جس میں متذکورہ ملزمین نے زبیدی پر مہلک ہتھیاروں سے حملہ کردیاتھاجس کی وجہ سے زبیدی کوشدیدزخمی حالت میں عثمانیہ جنرل ہاسپٹل منتقل کیاگیاجہاں ڈاکٹروں نے بعد معائنہ انہیں مردہ قراردیاتھا۔

ڈی سی پی ساؤتھ زون گجاراؤ بھوپال کے بموجب گرفتار شدہ 4 ملزین کی شناخت 23سالہ رئیس جابری‘32 سالہ عادل جابری‘29سالہ سیدصالح جابری اور 34سالہ سعادبن صالح جابری کی حیثیت سے کی گئی۔ملزمین کے پاس سے 2بائکس‘ چاقووں کے علاوہ 4سل فونس کوضبط کرلیاگیا۔

تمام ملزمین صلالہ بارکس کے متوطن بتائے گئے۔قتل کا واقعہ ہاشم آباد بنڈلہ گوڑہ روڈ پر پیش آیاتھا۔مقتول نے اس سے قبل جان کو درپیش خطرہ سے پولیس کو واقف کرایا تھامگر زبیدی کو مناسب سیکوریٹی فراہم نہ کرنے کے سلسلہ میں سب انسپکٹر وینکٹیش کو کمشنر پولیس انجی کمارنے معطل کردیا۔

رئیس جابری اورمقتول دبئی میں کام کرچکے ہیں حسنبن علی زبیدی نے بغیر اطلاع سونے کابیاگ حوالے کیاتھا۔ رئیس جابری کو 2019 میں سنٹرل اکسائزاورک سٹمس حکام نے گرفتار کرکے ملزم کے قبضہ سے ایک کیلوسونا اور پاسپورٹ ضبط کرلیا تھا یہ سونا اور پاسپورٹ شمس آبادکے آرجی آئی ایرپورٹ پر ضبط کیا گیا۔ مقتول نے رئیس جابری کی فیملی سے وعدہ کیاتھا اس کوملازمت دلوائے گا۔

تین سال گزرنے کے بعدبھی مقتول نہ ہی پاسپورٹ دلوائے اورنہ ہی ملازمت دلوایا اور نہ ہی سونے کی اسمگلنگ کے کیس میں ان کی مدد کی۔ان ملزمین نے ایک منصوبہ بناکر حسن بن علی زیدی کا قتل کردیا۔انسپکٹر چندرائن گٹہ اور ٹیم نے اے سی پی فلک نما ڈیویژن ایم اے مجید کی نگرانی میں یہ گرفتاریاں عمل میں لائی گئیں۔ ملزمین کوعدالتی تحویل میں دیا جائے گا۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.