کورونا کی امکانی تیسری لہر سے نمٹنے حکومت مکمل تیار

محکمہ ہیلت کے عہدیداروں نے واضح کردیا ہے کہ ڈیلٹا وئیرینٹ کاانفیکشن انتہائی شدید رہے گا۔ آنے والے دنوں میں انفیکشن کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے تمام تر تیاریاں ناگزیر ہیں جہاں تک کورونا کی تیسری لہرکاامکان ہے‘ تلنگانہ میں بچوں کے علاج کے لئے انفراسٹرکیچر کی تخلیق کاعمل صحیح سمت میں جاری ہے۔

حیدرآباد: کوروناکی تیسری لہرکے انتباہ کے درمیان ریاست میں یکم ستمبرسے تعلیمی اداروں کی کشادگی کومدنظررکھتے ہوئے حکومت تلنگانہ کورونا وائرس کے انفیکشن کے بڑھتے واقعات کے چیالنج سے نمٹنے کیلئے مکمل تیار ہے۔

اس ضمن میں حکومت نے سرکاری ہاسپٹلس میں انفراسٹرکیچر کی تخلیق کی ہے اور بچوں میں انفیکشن کاموثرعلاج کے لئے عملہ کو مناسب تربیت فراہم کی جارہی ہے۔ چیف منسٹرکے چندرشیکھرراؤ کی راست نگرانی میں سرکاری دواخانوں میں انفراسٹرکچر کوفروغ دیا گیا ہے۔

بچوں میں کووڈ19 کے انفیکشن کے بڑھتے واقعات کی صورت میں اس صورتحال سے نمٹنے کیلئے عملہ کومناسب ٹریننگ بھی دی جارہی ہے۔

ڈائرکٹر میڈیکل ایجوکیشن ڈاکٹر کے رمیش ریڈی کے مطابق چیف منسٹرکے چندرشیکھرراؤان کاموں کو بعجلت ممکنہ انجام دینے کے خواہاں ہیں کیونکہ وہ کوئی بھی موقع دینانہیں چاہتے۔

محکمہ ہیلت کے عہدیداروں نے واضح کردیا ہے کہ ڈیلٹا وئیرینٹ کاانفیکشن انتہائی شدید رہے گا۔ آنے والے دنوں میں انفیکشن کے پھیلاؤ کو روکنے کیلئے تمام تر تیاریاں ناگزیر ہیں جہاں تک کورونا کی تیسری لہرکاامکان ہے‘ تلنگانہ میں بچوں کے علاج کے لئے انفراسٹرکیچر کی تخلیق کاعمل صحیح سمت میں جاری ہے۔

ہم نے 6 ہزاراضافی بیڈس کوفروغ دینے سے مربوط کاموں کومکمل کرلیاہے اور ان ہرایک بیڈکو طبی آلات فراہم کرنے کے کام پورے ہوچکے ہیں۔ اگر عوام احتیاط برتیں گے اورکورونا ویکسین لیں گے توتیسری لہر کوروکاجاسکتا ہے۔ ڈاکٹررمیش ریڈی نے یہ بات بتائی۔

انہوں نے مزیدبتایاکہ مجموعی طورپرہم نے میڈیکل انفراسٹرکیچرکوتیزی کیساتھ فروغ دیاہے ریاستی حکومت‘سرکاری وخانگی ہاسپٹلوں میں 10 ہزاراضافی بیڈس کیساتھ بچوں کے لئے خصوصی طورپر20 ہزاربیڈس کی تخلیق کرنے کاجائزہ لے رہی ہے۔

خانگی ہاسپٹلس کے انظامیہ نے پہلے ہی یہ بتادیاہے کہ امکانی تیسری لہر کے پیش نظردواخانوں میں اضافی بیڈس کی تخلیق اور درکارضروری آکسیجن سپلائی سسٹم کے کام مکمل کرلئے گئے ہیں۔

حکومت نے پڈیاٹرکس انفراسٹرکیچر کے حصول کے لئے 133.90 کروڑ روپے مختص کئے ہیں۔ انفراسٹرکیچر کے معاملہ میں گذشتہ 4ماہ کے دوران ہم تیزی کے ساتھ پیش رفت کرچکے ہیں۔انہوں نے یقین دہانی کرائی کہ آکسیجن لائن اورآئی سی یوبیڈس سے مربوط سیول کام کوچنددنوں کے اندرمکمل کرلیاجائے گا۔

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.