اقلیتوں کیلئے بھی سب پلان بنایا جائے۔ چیف منسٹر سے مطالبہ

ان قائدین نے کہا کہ حکومت کی جانب سے ہر سال بجٹ میں اقلیتوں کیلئے انتہائی کم رقم مختص کی جاتی ہے۔ اس بجٹ میں سے بھی حکومت صرف30تا40 فیصد رقم ہی اقلیتوں کی فلاح وبہبود پر خرچ کرتی ہے۔

حیدرآباد: دانشور، ماہرین تعلیم، خود مختار اداروں اور مختلف تنظیموں کے ذمہ داران نے حکومت تلنگانہ سے مطالبہ کیا کہ وہ اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں کی معاشی تعلیمی و دیگر مسائل حل کرنے کیلئے سب پلان بنانے کا اعلان کرے۔

ان قائدین نے کہا کہ حکومت کی جانب سے ہر سال بجٹ میں اقلیتوں کیلئے انتہائی کم رقم مختص کی جاتی ہے۔ اس بجٹ میں سے بھی حکومت صرف30تا40 فیصد رقم ہی اقلیتوں کی فلاح وبہبود پر خرچ کرتی ہے۔ 

بجٹ کی ماباقی رقم غیر اقلیتی، اسکیمات پر خرچ کی جاتی ہے۔ شرکاء نے آندھرا پردیش کے چیف منسٹر جگن موہن ریڈی کا شکریہ ادا کیا جنہوں نے اقلیتوں کے لئے سب پلان مرتب کرنے کا اعلان کیاہے۔

جوائنٹ ایکشن کمیٹی فار سب پلان کی جانب سے گول میز کانفرنس منعقد کی گئی تھی۔یہ کانفرنس صدر ایس سی، ایس ٹی بی سی مسلم فرنٹ ثنا ء اللہ خان کی صدارت میں منعقدکی گئی۔

گول میز کانفرنس میں سابق رکن پارلیمنٹ سید عزیز پاشاہ، محمد وحید آئی ایف ایس سابق ایم ڈی اقلیتی مالیاتی کارپوریشن تلنگانہ،قومی صدر آل انڈیا مسلم لیگ عبدالستار مجاہد، منیجنگ ایڈیٹر سیاست ظہیر الدین علی خان، پروفیسر انور خاں، سردار سجن سنگھ، ملا محمد یوسف، پروفیسر امیر الدین صدر موومنٹ پیس اینڈ جسٹس، عبدالعزیز قومی صدر آل انڈیا مائناریٹیز ویلفیر اسوسی ایشن، شمشاد قادری، محمد افضل ایڈوکیٹ، میر مسعود علی خان ایڈوکیٹ، طارق قادری ایڈوکیٹ، ایم اے صدیقی، مجاہد ہاشمی، سید مختار حسین، جماعت اسلامی کے نمائندے، محترمہ خالدہ پروین، الیاس شمسی، عباس، محمد عفان، محمدفاروق دیگر نے خطاب کیا۔

انہوں نے کہا کہ چیف منسٹر کے  چندر شیکھر راؤ نے علیحدہ تلنگانہ تحریک کے موقع پر تشکیل تلنگانہ کے بعد مسلمانوں کو 12فیصد تحفظات، وقف بورڈ کو عدالتی اختیارات دینے، وقف اراضیات پر قبضوں کو برخواست کرانے کے علاوہ دیگر کئی وعدے کئے گئے تھے۔

ٹی آر ایس حکومت اقتدار پر فائز ہو کر 7سال کا عرصہ ہوگیا ہے مگر اب تک  ان وعدوں پر عمل آوری نہیں کی گئی ہے۔گول میز کانفرنس میں چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ، سیاستی جماعتوں کے صدور، اپوزیشن ارکان اسمبلی کویادداشتیں حوالے کرنے کیلئے ایک 4 رکنی کمیٹی تشکیل دی گئی ہے۔

اس کمیٹی کے صدرنشین محمد وحید احمد آئی ایف ایس رہیں گے جبکہ ارکان کمیٹی میں پروفیسر انور خان، ملا محمد یوسف کو شامل کیا گا ہے۔اجلاس میں مولانا کلیم صدیقی کی گرفتاری پر افسوس کااظہار کیا۔

اتر پردیش کی حکومت سے فوری مولانا کلیم الدین صدیقی کو رہا کرنے کے مطالبہ پر قرار داد منظور کی گئی۔صدر خیرامت کمیٹی منیر الدین مجاہد نے کاروائی چلائی۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.