ای راجندر کی بیوی شوہر سے زیادہ مالدار

راجندر نے الزام عائد کیا کہ اگر حضورآباد کا ضمنی انتخاب آزادانہ ومنصفانہ انداز میں منعقد کیا جائے تو ٹی آر ایس کا امیدوار اپنی ضمانت بھی نہیں بچا سکے گا۔

حیدرآباد: تلنگانہ کے سابق وزیر اور حضور آباد ضمنی انتخاب کیلئے بی جے پی کے امیدوار ایٹالہ راجندر اور ان کی اہلیہ ایٹالہ جمنا کی مجموعی دولت زائد از 35کروڑ روپئے ہے تاہم جمنا‘ راجندر سے زیادہ مالدار ہیں۔ جمنا کی جانب سے 30اکتوبر کے ضمنی انتخاب کیلئے اپنا پرچہ نامزدگی داخل کئے جانے کے دوران الیکشن حکام کو دئیے گئے ایک حلف نامہ سے یہ انکشاف ہوا۔ جمنا نے جو گذشتہ چند ہفتوں سے اپنے شوہر کے ساتھ انتخابی مہم چلا رہی تھیں‘ بی جے پی کی جانب سے اپنا پرچہ نامزدگی داخل کیا۔

 پارٹی ذرائع کے مطابق انتخابات سے قبل راجندر کی گرفتاری کی صورت میں احتیاطی اقدام کے طورپر جمنا کو بھی امیدوار بنایا گیا ہے۔ واضح رہے کہ چیف منسٹر کے چندرشیکھر راؤ نے مئی میں راجندر پر ضلع میدک کے بعض کسانوں کی اراضی ہڑپ لینے کا الزام عائد کرتے ہوئے انہیں ریاستی کابینہ سے خارج کردیا تھا۔

 ریاستی حکومت نے ضلع میدک میں کسانوں کی زمین اور ضلع ملکاجگری کے میڑچل میں انڈومنٹ اراضی پر قبضہ کرلینے کا الزام عائد کرتے ہوئے راجندر کے خلاف دو علحٰدہ تحقیقات کا حکم دیا تھا۔ بعدازاں راجندر نے حکمراں تلنگانہ راشٹرا سمیتی(ٹی آر ایس) سے استعفیٰ دے دیا تھا اور اسمبلی کی رکنیت سے بھی مستعفی ہوگئے تھے۔

راجندر نے جون میں بی جے پی میں شمولیت اختیار کرلی تھی۔ راجندر کی اہلیہ نے پیر کے روز حضور آباد ضمنی انتخاب کیلئے اپنا پرچہ نامزدگی داخل کیا۔ 56سالہ خاتون نے 12ویں جماعت تک تعلیم حاصل کی ہے اور ان کا پیشہ تجارت ہے۔ جمنا نے اپنے حلفنامہ میں بتایا ہے کہ ان کی سالانہ آمدنی 1,33,40,372روپئے ہے جبکہ ان کے شوہر کی سالانہ آمدنی 30,16,592روپئے ہے۔

حلفنامہ کے مطابق جمنا کے پاس 28.68کروڑ روپئے کے منقولہ اثاثہ جات ہیں جبکہ ان کے شوہر کے پاس صرف 6.20لاکھ روپئے کے منقولہ اثاثہ جات ہیں۔ جمنا کے اثاثوں میں 2اینووا گاڑیاں شامل ہیں لیکن راجندر کے نام پر کوئی گاڑی نہیں ہے۔ جمنا کے پاس 50لاکھ روپئے مالیتی 1500گرام وزنی سونے کے زیورات بھی ہیں۔ انہوں نے 23.23کروڑ روپئے قرض بھی دئیے ہیں۔ ان کے غیر منقولہ اثاثوں کی مالیت 4.89 کروڑ روپئے ہے جبکہ راجندر کے پاس صرف  3.62کروڑ روپئے کے غیر منقولہ اثاثے ہیں۔ جمنا کے واجبات 4.89کروڑ روپئے ہیں اور ان کے شوہر کے واجبات 3.62کروڑ روپئے ہیں۔

 اسی دوران راجندر نے الزام عائد کیا کہ اگر حضورآباد کا ضمنی انتخاب آزادانہ ومنصفانہ انداز میں منعقد کیا جائے تو ٹی آر ایس کا امیدوار اپنی ضمانت بھی نہیں بچا سکے گا۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ حکمراں جماعت نے ضمنی انتخاب جیتنے کیلئے 4,700 کروڑ روپئے خرچ کئے ہیں۔ انہوں نے یہ بھی الزام لگایا کہ چیف منسٹر کے سی آر پرگتی بھون میں بیٹھ کر سازشیں تیار کر رہے ہیں جبکہ وزیر فینانس ٹی ہریش راؤ انہیں روبہ عمل لارہے ہیں۔

 توقع ہے کہ ای راجندر ایک یا دو دن میں اپنا پرچہ نامزدگی داخل کریں گے۔ اس حلقہ میں سہ رخی مقابلہ کی امید ہے۔  ٹی آر ایس کے امیدوار جی سرینواس یادو نے پہلے ہی اپنا پرچہ نامزدگی داخل کردیا ہے جبکہ کانگریس پارٹی نے بالامور وینکٹ کو اپنا امیدوار بنایا ہے۔

 الیکشن کمیشن آف انڈیا کی جانب سے گذشتہ ہفتہ انتخابی شیڈول کا اعلان کیا گیا جس کے مطابق پرچہ نامزدگی داخل کرنے کی آخری تاریخ 8اکتوبر ہے۔ 11اکتوبر کو جانچ پڑتال ہوگی۔ نامزدگی واپس لینے کی آخری تاریخ 13اکتوبر مقرر کی گئی ہے۔ پولنگ 30اکتوبر کو ہوگی جبکہ 2نومبر کو ووٹوں کی گنتی کی جائے گی۔ سارا انتخابی عمل  5نومبر تک مکمل کرلینا ہوگا۔

ذریعہ
آئی اے این ایس

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.