بھیڑ بکریوں کی تقسیم اسکیم میں مسلمانوں کوشامل کرنے کامطالبہ

کوثرمحی الدین نے سوال کیا تھا کہ بھیڑبکریوں کی افزائش اور گوشت کے کاروبار کے پیشہ سے مسلمان بھی وابستہ ہیں اس لئے ان مسلمانوں کو بھیڑ بکریوں کی تقسیم کی اسکیم میں 4سے 5 فیصد تک تحفظات ملناچاہئے۔

حیدرآباد: بھیڑبکریوں کی افزائش اور گوشت (میٹ) کے کاروبارکے پیشہ سے وابستہ مسلم برادری کو بھیڑبکریوں کی تقسیم کے یونٹ اسکیم میں شامل کرنے کے مطالبہ کوچیف منسٹرکے چندرشیکھر راؤ سے رجوع کیاجائے گا۔

ریاستی وزیر افزائش مویشیان وسمکیات ٹی سرینواس یادو نے آج اسمبلی میں یہ اعلان کیاہے‘وہ مجلس کے رکن کوثرمحی الدین کے ایک سپلیمنٹری سوال کاجواب دے رہے تھے۔

کوثرمحی الدین نے سوال کیا تھا کہ بھیڑبکریوں کی افزائش اور گوشت کے کاروبار کے پیشہ سے مسلمان بھی وابستہ ہیں اس لئے ان مسلمانوں کو بھیڑ بکریوں کی تقسیم کی اسکیم میں 4سے 5 فیصد تک تحفظات ملناچاہئے۔

قبل ازیں ٹی آرایس کے ارکان این بھگت‘اے جیون ریڈی اور دیگر کے سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیر ٹی سرینواس یادونے ایوان میں کہاکہ ریاست میں جب سے شیپ یونٹ کی تقسیم اسکیم کاآغازہوا تب سے تلنگانہ میں بھیڑبکریوں کی افزائش میں اضافہ ہواہے۔

متعلقہ

یہ بھیڑبکریاں‘10ہزار کروڑ کے اثاثہ بن گئے۔اس سے دیہی معیشت کوبڑھاوا دینے میں مددمل رہی ہے۔

انہوں نے کہاکہ پہلے مرحلہ میں 3,80,878یونٹس تقسیم کئے گئے۔ دوسرے مرحلہ میں 3,50,000 بھیڑ بکریوں کے یونٹس حوالے کئے جائیں گے۔

ریاست میں ان مویشیوں کی تعداد 191,00لاکھ تک پہونچ گئی ہے۔ ایک شیپ یونٹ پر حکومت 75فیصد سبسیڈی فراہم کررہی ہے۔یونٹ کی قیمت 1.75 لاکھ روپے مقرر کی گئی ہے۔

وزیر نے مزید بتایا کہ حکومت صارفین کو کھلے بازار سے کم قیمت پربرانڈڈ گوشت فراہم کرنے کے منصوبہ پرکام کررہی ہے۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.