جی ایچ ایم سی دفتر میں بی جے پی کارکنوں کی توڑ پھوڑ

احتجاجیوں نے دفتر میں انگریزی میں لکھے جی ایچ ایم سی کے الفاظ پر سیاہی لگادی اور وہاں رکھے پھولوں کے گملوں کو بھی نقصان پہنچایا۔ان احتجاجی کارکنوں نے دفتر جی ایچ ایم سی میں پوسٹرس بھی لگادیئے۔

حیدرآباد: بی جے پی کے کارپوریٹرس نے گریٹرحیدرآباد میونسپل کارپوریشن(جی ایچ ایم سی)کے دفتر میں گھس کر شدید احتجاج کیا اور دفتر میں توڑپھوڑکی جس کے نتیجہ میں کچھ دیر کے لئے کشیدگی پھیل گئی۔ احتجاجیوں نے اپنے ہاتھوں میں پلے کارڈس تھام کر حکومت سے مطالبہ کیا کہ جی ایچ ایم سی کو ملنے والے فنڈس جاری کئے جائیں۔

انہوں نے اپنے مطالبہ کی حمایت میں نعرے بازی بھی کی۔اس احتجاج میں بی جے پی کے کارپوریٹرس کے ساتھ ساتھ بی جے پی کے کارکنوں کی بڑی تعداد نے حصہ لیا ۔ احتجاجیوں نے دفتر میں انگریزی میں لکھے جی ایچ ایم سی کے الفاظ پر سیاہی لگادی اور وہاں رکھے پھولوں کے گملوں کو بھی نقصان پہنچایا۔ان احتجاجی کارکنوں نے دفتر جی ایچ ایم سی میں پوسٹرس بھی لگادیئے۔

اس پوسٹر میں لکھاگیا ہے کہ کے سی آرکا ڈلاس شہر کہاں ہے؟کے ٹی آرکا عالمی شہر کہاں ہے؟بی جے پی کے کارکنوں نے الزام لگایا کہ اسٹینڈنگ کمیٹی کی بھی تشکیل عمل میں نہیں لائی گئی ہے۔ بعد ازاں یہ احتجاجی مئیر کے چیمبر میں گھس گئے۔اس وقت مئیر چیمبر میں نہیں تھیں۔ ان کارکنوں نے چیمبرمیں بھی احتجاج کیا اور حکومت کے خلاف نعرے بازی کی۔

ان احتجاجی کارپوریٹرس نے کہاکہ ان کی کامیابی کے ایک سال کے بعد ایک مرتبہ بھی اجلاس منعقد کیانہیں کیاگیا،صرف آن لائن اجلاس سے اکتفاکیاگیا۔ انہوں نے کہاکہ ہر چارماہ میں ایک مرتبہ اجلاس منعقد کرنے کی روایت ہے تاہم ایک مرتبہ بھی اجلاس منعقد نہیں کیاگیا۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.