تلنگانہ میں اسکولس کھول دیئے گئے،40فیصد حاضری:وزیرتعلیم

کئی اسکولس میں اساتذہ نے طلبہ کو پھول پیش کرتے ہوئے ان کا استقبال کیا۔اسکولس میں کووڈ کے اصولوں پر عمل کرتے ہوئے کلاسس میں جسمانی فاصلہ کی برقراری کو یقینی بنایاگیا۔بعض اسکولس میں پیرنٹس ٹیچرس میٹنگ کا بھی اہتمام کیاگیا۔

حیدرآباد: تلنگانہ بھر میں آج سے اسکولس کھول دیئے گئے ہیں جو مارچ 2020میں کووڈ وبا کے پیش نظربند کردیئے گئے تھے۔گذشتہ روز ریاستی ہائی کورٹ نے اسکولس کو کھولنے کی اجازت دی تھی جس کے بعد کووڈ کے رہنمایانہ خطوط پر عمل کرتے ہوئے اسکولس کو کھولاگیا ہے تاہم اقامتی اسکولس اورہاسٹلس کو کھولنے پر ہائی کورٹ کا حکم التوا ہے۔

کئی اسکولس میں اساتذہ نے طلبہ کو پھول پیش کرتے ہوئے ان کا استقبال کیا۔اسکولس میں کووڈ کے اصولوں پر عمل کرتے ہوئے کلاسس میں جسمانی فاصلہ کی برقراری کو یقینی بنایاگیا۔بعض اسکولس میں پیرنٹس ٹیچرس میٹنگ کا بھی اہتمام کیاگیا۔

طلبہ کی طویل قطاریں اسکولس میں دیکھی گئیں جن میں تعلیم کے تئیں جوش وخروش دیکھاگیا کیونکہ ایک عرصہ کے بعد اسکولس دوبارہ کھل گئے ہیں۔کئی طلبہ اپنے ساتھیوں کے ساتھ گھل مل گئے۔تقریبا 18ماہ بعد اسکولس کو واپسی کے بعد دوستوں کے ساتھ ان کی ملاقات ہوئی۔ ایسے طلبہ جو ورچول کلاسس کو جاری رکھنا چاہتے تھے ان کیلئے اسکولس سے ورچول کلاسس کا اہتمام کیاگیا۔

بعض اسکولس کی جانب سے ہنوز شخصی کلاسس کا آغاز نہیں کیاگیا بلکہ یہ اسکولس صورتحال پر نظررکھے ہوئے ہیں اور آن لائن کلاسس کو جاری رکھے ہوئے ہیں۔اسی دوران وزیرتعلیم سبیتااندراریڈی نے شہر حیدرآباد کی وجئے نگر کالونی میں سرکاری اسکول کا معائنہ کیا۔انہوں نے اسکول کی صورتحال کاجائزہ لیا۔اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ پہلے سے زیادہ احتیاط اور چوکسی کی ضرورت ہے۔اسکولس میں صبح میں کوویڈ کے اصولوں پر عمل کے سلسلہ میں طلبہ کو مشورے دیئے جائیں۔دوپہر کے کھانے کے موقع پر سماجی فاصلہ برقراررکھاجائے۔تمام ڈی ای اوز اور صدورمدارس کو اس سلسلہ میں تال میل پیداکرنے کی ضرورت ہے۔

ریاست میں پہلی سے دسویں جماعت تک کے طلبہ کی تعداد 60لاکھ ہے، ان میں 29لاکھ طلبہ سرکاری اسکولس میں تعلیم حاصل کررہے ہیں، ان طلبہ میں بیداری کی ضرورت ہے۔جس بھروسہ سے والدین نے اپنے بچوں کو اسکول کو بھیجا ہے، اس بھروسہ پر پورااترنے کی ضرورت ہے۔انہوں نے کہاکہ آج اسکولس میں 40فیصد طلبہ کی حاضری رہی۔

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.