تلنگانہ میں اندرون3ماہ ٹیکہ اندازی عمل مکمل کرلیا جائے :ہائیکورٹ

عملی منصوبہ پر عمل آوری میں تاخیر پر ناخوشی کا اظہار کرتے ہوئے عدالت نے ڈائرکٹر پبلک ہیلت ڈاکٹر جی سرینواس راؤ سے سوال کیا کہ دو سے زائد بار احکام کی اجرائی کے باوجود رپورٹ آخر کیوں پیش نہیں کی گئی؟

حیدرآباد: تلنگانہ ہائیکورٹ نے حکومت کو ریاست میں آئندہ 3ماہ کے دوران کورونا ٹیکہ اندازی کے عمل کو مکمل کرنے کا حکم دیا ہے۔ تلنگانہ میں کورونا کی صورتحال پر داخل کردہ عرضی کی سماعت کرتے ہوئے عدالت العالیہ نے 2ماہ کے اندر تمام تعلیمی اداروں کے اسٹاف کو درکار ٹیکہ اندازی کا عمل پورا کرنے کی ہدایت دی اور عدالت نے ریاست میں آر  ٹی پی سی آر ٹسٹ کی تعدادبڑھانے کی بھی ہدایت دی۔

 عملی منصوبہ پر عمل آوری میں تاخیر پر ناخوشی کا اظہار کرتے ہوئے عدالت نے ڈائرکٹر پبلک ہیلت ڈاکٹر جی سرینواس راؤ سے سوال کیا کہ دو سے زائد بار احکام کی اجرائی کے باوجود رپورٹ آخر کیوں پیش نہیں کی گئی؟

 ہائی کورٹ کے سوال پر ڈائرکٹر ہیلت نے عدالت کو بتایا کہ اعلیٰ سطح پر حکومت کو پالیسی فیصلہ لینا ہوگا۔ تب عدالت نے سوال کیا کہ آیا حکومت کی پالیسیوں کو نافذ کریں گے؟ یا پھر عدالتی احکام کو روبعمل لائیں گے۔

ہائیکورٹ نے واضح طور پر کہہ دیا ہے کہ اگر عدالتی احکام کو نافذ نہیں کریں گے تو پھر انہیں سنگین نتائج کا سامنا کرنا پڑے گا۔عدالت نے حکومت کو 30ستمبر تک کلرکوڈیڈ گریڈڈریسپانس(سی سی جی آر مالس اور دیگرمقامات پر کووڈ کیسس میں اضافہ کا انتباہ کا نظام) کو قطعیت دینے کا حکم دیا ہے۔ تلنگانہ ہائی کورٹ نے مرکزی حکومت کو 31اکتوبر تک ہنگامی لسٹ میں کورنا میڈیسن میں شال کرنے کا حکم دیا ہے اور آئند سماعت4/ اکتوبر تک ملتوی کردی۔

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.