تلنگانہ میں ڈرون ٹیسٹنگ راہداری کے قیام کا منصوبہ: کے ٹی آر

ریاستی وزیر کے ٹی آر نے کہا کہ تلنگانہ، ایرو انجن کلسٹرس کے طور پر ابھر رہا ہے۔ بیرونی اور قومی کمپنیاں، حیدرآباد میں اپنے یونٹس قائم کررہی ہیں۔

حیدرآباد: ریاستی وزیر بلدی نظم ونسق وشہری ترقیات، صنعتیں وآئی  ٹی کے تارک راما راؤ نے آج کہا کہ ریاست تلنگانہ میں ڈرون ٹسٹنگ راہداری کے قیام کا منصوبہ حکومت کے زیر غور ہے تاکہ ڈرون صنعت کو فروغ دیا جاسکے۔

انہوں نے کہا کہ بہت جلد ریاست  کے منصوبہ پر عمل آوری کی جائے گی۔

کے ٹی آر نے کہا کہ حیدرآباد اسپیس سیکٹر کلسٹر، اسرو کے پروگرام کا ایک اہم حصہ ہے۔ مارس (مریخ) آربیٹرمشن کے 30 فیصد اجزا کو حیدرآباد کی کمپنیوں نے بنایا ہے۔

ٹاٹا، لکھیڈ مارٹن ایروا سٹرکچر لمیٹڈ (ٹی ایل ایم اے ایل) حیدرآباکے مرکز میں منعقدہ ایک پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے کے ٹی آر نے یہ بات کہی۔

سی۔ 130جے ہرکیولس امپنیج (جہاز کا پچھلا حصہ، دم) کی 150 ویں کھیپ کی روانگی کے سلسلہ میں یہ پروگرام منعقد ہوا تھا۔

ریاستی وزیر کے ٹی آر نے کہا کہ تلنگانہ، ایرو انجن کلسٹرس کے طور پر ابھر رہا ہے۔ بیرونی اور قومی کمپنیاں، حیدرآباد میں اپنے یونٹس قائم کررہی ہیں۔

تلنگانہ، ملک کی پہلی ریاست ہے جس نے ڈرون پالیسی کو قطعیت دی ہے اور زندگی بچانے والی دواؤں اور ویکسین کو ڈرون کے ذریعہ منتقل کرتے ہوئے تلنگانہ کو ملک بھر میں پہلا مقام حاصل ہوا ہے۔

حالیہ دنوں ورلڈ اکنامکس فورم کے اشتراک سے ”میڈیسن فرم اسکائی متعارف کرایا گیا ہے جس کے تحت دو رافتادہ مقامات کو ڈرون کے ذریعہ زندگی بچانے والی دوائیں اور ویکسین پہنچائی گئیں۔

کے ٹی آر نے دعویٰ کیاہے کہ تلنگانہ میں گذشتہ5برسوں کے دوران ایرو اسپیس اور ڈیفنس سیکٹر کو تیزی کے ساتھ فروغ حاصل ہوا ہے۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.