تلنگانہ کو گلابی پرچم سے نجات دلاناضروری: ریونت ریڈی

وزیر اعظم نریندر مودی پر تنقید کرتے ہوئے صدر ٹی پی سی سی نے کہا کہ جس ریلوے اسٹیشن پر مودی چائے فروخت کیا کرتے تھے، اُس اسٹیشن کی تعمیر کانگریس حکومت نے ہی کرائی تھی۔اُنہوںنے مزید کہاکہ مودی ملک کےلئے بوجھ بن گئے ہیں۔

حیدرآباد: صدر ٹی پی سی سی اے ریونت ریڈی نے کہا کہ تلنگانہ کو گلابی پرچم سے نجات دلانے کیلئے ایک اور فیصلہ کن جدوجہد کرنا ضروری ہے۔ آج اندرا پارک پر حکومت کے عوام مخالف اقدامات کے خلاف منظم کردہ  کل جماعتی احتجاجی دھرنا سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ طویل جدوجہد اور بے شمار قربانیوں کے بعد حاصل تلنگانہ، چار افراد کے ہاتھوں میں جکڑا ہوا ہے۔ تلنگانہ کو ان چار افراد کے شکنجہ سے آزاد کرانا ضروری ہے۔

ریونت ریڈی نے کہا کہ ریاستی اور مرکزی حکومتیں ایک ہی سکہ کے دو رخ ہیں جن سے عوام کو نجات دلانا ضروری ہے۔ دونوں حکومتوں کی جانب سے ٹیکس میں اضافہ کرتے ہوئے عوام کی زندگیوں کو اجیرن بنا دیا ہے۔صرف پٹرول اور ڈیزل پر ٹیکس کی شکل میں ہر سال24لاکھ کروڑ روپے وصول کئے جار ہے ہیں۔

 انہوں نے کہا کہ مودی نے بیرونی ممالک سے کالا دھن واپس لانے کا وعدہ کیا تھامگر اس وعدے کو بری طرح فراموش کردیا گیا۔ غریب خاندانوں کو 15لاکھ روپے دینے کے وعدے سے بھی وہ مکر گئے۔ مرکزی و ریاستی حکومتوں پر عوامی مسائل سے بے بہرہ ہوجانے کا الزام لگاتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ملک میں غریب عوام کو دینے کیلئے کورونا ویکسین کی بھی قلت کا سامنا ہے تو دوسری طرف سالگرہ کے موقع پر گفٹ ویکسین دی جارہی ہے۔

وزیر اعظم نریندر مودی پر تنقید کرتے ہوئے صدر ٹی پی سی سی نے کہا کہ جس ریلوے اسٹیشن پر مودی چائے فروخت کیا کرتے تھے، اُس اسٹیشن کی تعمیر کانگریس حکومت نے ہی کرائی تھی۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس نے ریلوے اسٹیشن تعمیر کئے تو مودی ریلویز کو فروخت کرنا چاہتے ہیں۔ حکومت6لاکھ کروڑ روپے مالیتی سرکاری املاک کو فروخت کرنے پر تلی ہوئی ہے۔ مودی ملک وقوم کے لئے بوجھ بن گئے ہیں۔

 ملک کی آزادی کے بعد پہلی بار ملک کی معیشت انحطاط کا شکار ہے۔ ملک و ریاست کو بچانے کیلئے ہی کل جماعتی احتجاج کیا جارہا ہے تاکہ ملک اور ریاست کو بحران سے بچایا جاسکے۔ ریونت ریڈی نے27 ستمبر کو منعقد شدنی کل جماعتی بھارت بنداحتجاج کو کامیاب بنانے کی اپیل کی۔ صدر تلنگانہ جنا سمیتی پروفیسر ایم کودنڈا رام نے کہا کہ ریاست میں شعبہ صحت عامہ بحران کی نذر ہوگیا ہے۔ کووڈ کی وجہ سے لاکھوں افراد کا روزگار شدید طور پر متاثر ہوا ہے۔

 چیف منسٹر پر سیاہ قوانین کو اختیار کرنے کا الزام لگا تے ہوئے کودنڈا رام نے کہا کہ دولت مند طبقہ کے فائدے کیلئے دھرانی قانون تیار کیا گیا۔ اس پورٹل کیلئے درخواست داخل کرنے والے اصل درخواست گذاروں کا کہیں اتہ پتہ نہیں ہے۔ انہوں نے حکومت سے پوڈو اراضیات کے پٹہ جاری کرنے کا مطالبہ کیا۔ صدر ٹی پی سی سی تشہیر کمیٹی مدھو گوڑ یاشکی نے کہا کہ تمام سیاسی جماعتوں کا مرکزی و ریاستی حکومتوں کے خلاف ایک پلیٹ فارم پر جمع ہونا تاریخی واقعہ ہے۔

 ملک کی سیاست میں اہم تبدیلی ہے۔ انہوں نے مرکزی حکومت پر جمہوریت کا قتل کرنے کا الزام عائد کیا اور کہا کہ تمام سیاسی جماعتوں کو ساتھ لیکر مرکزی و ریاستی حکومتوں کے ہوش ٹھکانہ لگائے جائیں گے۔ قومی سکریٹری سی پی ایم سیتا رام یچوری نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج سے ملک کو بچانے کیلئے تحریک کا آغاز ہوا ہے اور یہ مودی کو اقتدار سے بے دخل کرنے تک  جاری رہے گی۔

نریندر مودی پر جمہوریت کے چاروں ستون کو تباہ وبرباد کردینے کا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ مودی کا ہر بیرونی دورہ عوام کو تشویش میں مبتلا کردیتا ہے کہ اس بار کیا کچھ فروخت کیا گیا ہوگا؟ انہوں نے کہا کہ عوام کو اس خوف سے باہر آنے کیلئے مودی حکومت کا خاتمہ ضروری قرار دیا۔ قومی سکریٹری سی پی آئی ڈاکٹر نارائنا نے کہا کہ اپوزیشن جماعتوں کا اتحاد ایک تیر دو شکار کیلئے ہے۔

مرکز میں مودی اور ریاست میں کے سی آر حکومت کا خاتمہ کرنا ہے۔ اس احتجاجی دھرنے سے کانگریس قائد کو دنڈا ریڈی ناگم جناردھن ریڈی، سی پی ایم قائد ٹی ویرا بھدرم، سی وینکٹ ریڈی، سید عزیز پاشاہ ودیگر نے بھی خطاب کیا۔ اس موقع پر کانگریس، سی پی آئی، تلگودیشم، سی پی ایم، ودیگر جماعتوں کے قائدین وکارکنوں کی بڑی تعداد موجود تھی۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.