راج بھون میں گورنر تمیلی سائی عنقریب پرجادربار کا آغاز کریں گی

ابھی سے یہ چہ میگوئیاں شروع ہوچکی ہیں کہ اگر گورنر ”پرجا دربار“ کا اہتمام کرتی ہیں تو پھر کیا ہوگا۔ حکمراں جماعت ٹی آر ایس قائدین کو یہ خدشہ ہے کہ اگر گورنر پر جادربار پروگرام منعقد کرتی ہیں تو اس کے حکومت پر اثرات مرتب ہوں گے۔

حیدرآباد: گورنر تلنگانہ، ڈاکٹر تمیلی سائی سوندرا راجن راج بھون میں راست طور پر عوام کی شکایتوں کی سماعت کریں گی اور مسائل پر مبنی تحریری یادداشتوں کو وصول کریں گی۔ راج بھون کے عہدیدار اس سلسلہ میں انتظامات کررہے ہیں۔ توقع ہے کہ پرجا دربار کا آغاز اندرون ہفتہ یا عشرہ میں ہوگا۔

 ذرائع کے مطابق موجودہ گورنر، عوامی مسائل اور ان کی شکایتوں کی سماعت کیلئے ایک پلیٹ فارم کے طور پر پرجادربار کا اہتمام کرنا چاہتی ہیں اور  اپنے پیشرو گورنروں سے کچھ الگ کرنے کی خواہش رکھتی ہیں۔ ڈاکٹر تمیلی سائی سوندرا راجن نے تلنگانہ کی دوسری اور پہلی خاتون گورنر کی حیثیت سے 8 ستمبر2019 کو عہدہ کا جائزہ حاصل کیا تھا۔18 فروری 2021 میں انہیں پڈوچیری کا ایل ٹی بھی بنایا گیا۔

 ڈاکٹر تمیلی سائی سوندرا راجن ایک سرگرم وفعال گورنر ہیں۔ وہ مخصوص انداز اور غیر محسوس طریقہ سے ریاستی حکومت پر تنقید کرتی ہیں۔یہاں اس بات کا تذکرہ بھی ضروری رہے گا کہ سابق میں گورنر نے کہا تھا کہ ریاستی حکومت کو رونا وبا کی شدت کو سنجیدگی سے نہیں لے رہی ہے اور اس سلسلہ میں انہوں نے چیف منسٹر کے سی آر کو راست تنقید کا نشانہ بنایا تھا۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ بحیثیت ڈاکٹرمیں نے پہلی لہر سے3ماہ قبل حکومت کو وبا سے متعلق وارننگ دی تھی۔ میں نے6 سے زائد مکتوبات حکومت کو روانہ کئے تھے اور حکومت پر زور دیا تھا کہ ابتداء میں ہی وبا پر قابو پانے کیلئے سخت مساعی انجام دے۔ اس وقت حکمراں جماعت کے قائدین نے گورنر کے ان ریمارکس پر غیر ضروری تنازعہ کھڑا کردیا تھا۔

 گورنر نے قبائیلوں کے مسائل پر خصوصی توجہ دی اور مختلف یونیورسٹیوں کے وائس چانسلرس کے عدم تقررات پر حکومت کے رویہ پر افسوس کا اظہار کیا تھا۔ اب عوامی مسائل کی سماعت اور مسائل پر مبنی تحریری یادداشتوں کی وصولی سے متعلق پر جا دربار کے اہتمام کے گورنر کے فیصلہ سے سیاسی جماعتوں کے قائدین پر یشان ہیں۔ ابھی سے یہ چہ میگوئیاں شروع ہوچکی ہیں کہ اگر گورنر ”پرجا دربار“ کا اہتمام کرتی ہیں تو پھر کیا ہوگا۔ حکمراں جماعت ٹی آر ایس قائدین کو یہ خدشہ ہے کہ اگر گورنر پر جادربار پروگرام منعقد کرتی ہیں تو اس کے حکومت پر اثرات مرتب ہوں گے۔

متعلقہ
ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.