زرعی قوانین کی تنسیخ، ٹی آر ایس کی کامیابی: نرنجن ریڈی

وزیر زراعت نرنجن ریڈی نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی، آخر کا رملک میں زمینی سطح کی صورتحال سمجھ گئے۔ متنازعہ قوانین واقع کرنے پر مودی کو ملک کے کسانوں اور عوام سے معافی مانگنی چاہئے۔ یہ فیصلہ طویل عرصہ سے زیرالتواء تھا۔

حیدرآباد۔19 نومبر(منصف نیوز بیورو) حکمراں جماعت ٹی آر ایس کے قائدین اور وزراء نے آج متنازعہ 3زرعی قوانین کو منسوخ کرنے کے وزیر اعظم نریندر مودی کے فیصلہ کا خیر مقدم کیا اور دعویٰ کیا کہ یہ ٹی آر ایس کی عظیم کامیابی ہے۔ پارٹی قائدین نے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اس میں ٹی آر ایس نے حالیہ دنوں کسانوں کی تائید میں احتجاج منظم کرتے ہوئے اہم رول ادا کیا ہے جس میں چیف منسٹر کے چندر شیکھر راو، بذات خود شرکت کرتے ہوئے تلنگانہ میں کسانوں کی حمایت کی۔

ریاستی وزیر زراعت نرنجن ریڈی نے کہا کہ وزیر اعظم نریندر مودی، آخر کا رملک میں زمینی سطح کی صورتحال سمجھ گئے۔ متنازعہ قوانین واقع کرنے پر مودی کو ملک کے کسانوں اور عوام سے معافی مانگنی چاہئے۔ یہ فیصلہ طویل عرصہ سے زیرالتواء تھا۔ تین زرعی قوانین کی تنسیخ کا فیصلہ پہلے کیا جاتا تو کسانوں کو سراپا احتجاج بننے سے روکا جاسکتا تھا۔ انہوں نے احتجاجی کسانوں کو مبارکباد دی جنہوں نے سخت موسم اور ناموافق حالات کے باوجود اپنی لڑائی کو جاری رکھا‘ انہوں نے امیدظاہر کی کہ مرکزی حکومت، ٹی آر ایس کے احتجاج کے بعد تلنگانہ کے کسانوں سے دھان کی خریدی کا مناسب فیصلہ کرے گی۔

 انہوں نے مزید کہا کہ وزیر اعظم، تلنگانہ کے چیف منسٹر کے جذبہ جدوجہد سے بخوبی واقف ہیں۔ انہیں قوی امید ہے کہ تلنگانہ کسانوں کے احتجاج میں شدت آنے سے قبل مرکز، ریاست سے دھان کی خریدی کا معقول فیصلہ کرے گا۔ ٹی آر ایس کے کارگذار صدر و ریاستی وزیر بلدی نظم ونسق وشہری ترقیات کے ٹیآر نے ایک قول ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا کہ ”عوام کی طاقت ہمیشہ اقتدار میں موجودلوگوں سے زیادہ رہتی ہے۔

“ انہوں نے کا کہ کسانوں نے ایک بار پھر یہ ثابت کردیا کہ طویل، بے تکان جدوجہد سے وہ جو چاہیں گے وہ مل جائے گا۔ وزیر فینانس ٹی ہریش راؤ، وزیر برقی جی جگدیش ریڈی، وزیر پنچایت ای دیا کر راؤ، اور دیگر مرکز کے فیصلہ کا خیرمقدم کیا اور کہا کہ کسانوں کے تئیں کے سی آر کی قیادت سے خوفزدہ ہوکر وزیر اعظم نریندر مودی نے تین زرعی قوانین کو منسوخ کرنے کے فیصلہ کا اعلان کیا ہے۔

 ہریش راؤ نے کسانوں کے مسلسل احتجاج کی ستائش کی ہزاروں کسان نے 15ماہ سے دہلی کی سرحد پر شدید مشکلات کے باوجود مسلسل احتجاج کرتے ہوے ایک مثال قائم کی ہے۔احتجاجی کسانوں نے بندوق کی گولیوں، لاٹھیوں اور آبی توپوں اور خاردار تاروں کی بھی پروا نہیں کی۔ اس سے یہ بات ثابت ہوتی ہے کہ عوام، سخت محنت سے بھی حاصل کرسکتے ہیں۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.