نہرو زوالوجیکل پارک، شائقین کے لئے خوشخبری

سفاری پارک میں کچھ نئے دلچسپ اضافے دیکھنے کوملیں گے جیسے رینگنے والے جانوروں کاانکلوژرجس سے وہ لطف اٹھاسکیں گے جو آئندہ ماہ اکتوبر سے شروع ہوگا۔

حیدرآباد: ایک سال کے طویل عرصہ بعد زوکے شائقین کیلئے ایک خوش خبری ہے کہ سفاری پارک کا احیاء عنقریب عمل میں آرہاہے۔

واضح ہوکہ زوشائقین کے لئے جوحیدرآباد کے لئے خصوصی طورپرتفریح کاعمدہ ذریعہ سمجھا جاتا ہے جہاں وہ سب سے زیادہ تفریح کے لئے پہنچتے ہیں، اس سفاری پارک میں کچھ نئے دلچسپ اضافے دیکھنے کوملیں گے جیسے رینگنے والے جانوروں کاانکلوژرجس سے وہ لطف اٹھاسکیں گے جو آئندہ ماہ اکتوبر سے شروع ہوگا۔

مذکورہ انکلوژر ’واک اراؤنڈ‘ سے نہایت ہی قریب واقع ہے جو بیاچ ماڈل پر کام کرے گا۔یہ انکلوژردس منٹ کا ہوگا اور ہم شائقین کو20افرادپر مشتمل بیاچ میں بھجیں گے جس میں سماجی فاصلہ اور دیگر حفاظتی اقدامات شامل ہوں گے۔

یہ بات اے ناگامنی ڈپٹی کیوریٹرزو نے بتائی۔ اسی طرح جانوروں کے سفاری پارک میں اسی طرح کا اقدام کیا جائے گا تاہم عہدیداروں کے بموجب سفاری پارک میں گاڑیوں میں صرف 50فیصد شائقین کوہی بٹھایاجائے گا۔

خاتون عہدیدارنے بتایا کہ ہم تمام شائقین کے تحفظ کے متمنی ہیں تاہم ساتھ ہی کسی بھی بدنظمی یا ناخوشگوارتجربہ سے بچنے کے خواہاں بھی ہیں اس لئے یہ تمام اقدامات کئے جارہے ہیں۔

علاوہ ازیں سفاری پارک کی کشادگی بھی اسی لئے عمل میں لائی جارہی ہے کہ شائقین ہم سے اکثرپوچھتے رہتے ہیں کہ سفاری پارک کشادگی کب عمل میں آئے گی؟یادرہے کہ نہرو زوالوجیکل پارک 2000 جانوروں پر مشتمل ہے جس میں 200انواع واقسام کے جانور شامل ہیں۔

حیدرآباد میں نہرو زو پارک شہریوں کے لئے خصوصی دلچسپ مقامات کی فہرست میں شامل ہے جہاں پر عوام کی کثیرتعدادپہنچتی ہے۔اندازہ لگایا گیا ہے کہ وبائی دورکورونا سے قبل اوسطاً دس ہزار افراد یہاں پہنچتے تھے۔

تاہم بعدازاں کورونا کے دور کے بعد جب سے کشادگی عمل میں آئی ہے ویک اینڈس پر یہ تعداد 10ہزار سے 2تا3 ہزار پرسمٹ کررہ گئی ہے۔ سال 2020 سے قبل شائقین کی جوتعدادزائداز20ہزار ہوا کرتی تھی وہ اب 10تا12 ہزار پرسمٹ گئی ہے جس سے شائقین کی تعدادمیں کمی کا اندازہ کیاجاسکتا ہے۔

اب اس سفاری پارک میں نئے اضافوں سے عہدیداروں کو قوی توقع ہے کہ شائقین کی تعدادمیں قابل لحاظ اضافہ ہوگا۔سال 2020 میں نئے تعمیر کردہ پرندوں کاگھرجس کوابھی تک بندرکھاگیا تھا‘ عہدیداروں کے بموجب توقع ہے کہ آئندہ ماہ اکتوبر میں کھول دیاجائے گا جس میں 36 نئے زائدپرندوں کے انکلوژرشامل ہیں۔

ان میں نہ صرف ہندوستانی بلکہ معددم اور تقریباً نایاب پرندے جیسے گولڈن فیزنٹ‘ امیزون پیراکیت‘گرین مکاؤ‘سینیگل پیراکیت ودیگر شامل ہیں۔ زوعہدیداروں کے بموجب وبائی مرض کورونا کے باعث وہ ممکنہ طورپر تمام حفاظتی اقدامات کو روبہ عمل لارہے ہیں جس میں ماسک اور سنیٹائزر کولازمی قرار دیاگیا ہے۔

سنیٹائزرس کوزومیں مختلف مقامات پررکھا گیاہے۔ علاوہ ازیں ماسک کی خلاف ورزی کرنے والے شائقین پرجرمانہ عائد کیا جاسکتا ہے تاکہ دیگر شائقین کوکسی کی لاپرواہی کے باعث کوئی تکلیف نہ ہونے پائے۔ ناگامنی نے یہ بات بتائی۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.