پڑوسی دیہاتوں کے حصہ بننے کی خواہش‘ ریاست کی ترقی کاثبوت:کے ٹی آر

کے ٹی راماراؤ نے کہاکہ چیف منسٹرکے چندرشیکھر راؤ کی قیادت میں تلنگانہ کی ترقی اور خوشحالی کی دلیل ہے کہ پڑوسی ریاستوں کے عوام تلنگانہ کاحصہ بننا چاہتے ہیں۔

حیدرآباد: پڑوسی ریاستوں کے دیہاتوں کو تلنگانہ میں ضم کرنے کے مطالبات میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔تلنگانہ کے فلاحی اور ترقی پزیر ریاست کی شکل میں ابھرنے سے پڑوسی ریاستوں کے عوام میں تلنگانہ کاحصہ بننے کی خواہش میں بتدریج اضافہ دیکھا جارہا ہے۔

اب کرناٹک میں حکمران جماعت کے اراکین اسمبلی بھی تلنگانہ سے جڑنے کی بات کررہے ہیں۔ سابق میں نظام آباد اور عادل آباد کی سرحد پر واقع ریاست مہاراشٹراکے46 دیہاتوں کے عوام نے تلنگانہ میں ضم ہونے کی خواہش کا اظہارکیاتھا۔ اب کرناٹک میں رائچورسیٹی اسمبلی حلقہ کے نمائندے شیوراج پاٹل نے ضلع رائچورکوتلنگانہ میں ضم کرنے کا مطالبہ کیا اوران کی اس تجویزکواجلاس میں موجودشرکاء نے تالیاں بجاتے ہوئے خیر مقدم کیا۔

حیرت انگیزبات یہ رہی کہ شیوراج پاٹل نے یہ مطالبہ کسانوں کے مسائل پر غور وخوص کرنے کے لئے منعقدہ اجلاس کے دوران کیاجس میں ریاستی وزراء اورپارٹی کے سینئر قائدین موجود تھے۔

شیوراج پاٹل کی رائچور کو تلنگانہ میں ضم کرنے کی تجویز پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ریاستی وزیر کے ٹی راماراؤ نے کہاکہ چیف منسٹرکے چندرشیکھر راؤ کی قیادت میں تلنگانہ کی  ترقی اور خوشحالی کی دلیل ہے کہ پڑوسی ریاستوں کے عوام تلنگانہ کاحصہ بننا چاہتے ہیں۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.