کتہ پیٹ فروٹ مارکٹ کی منتقلی، محکمہ مارکٹنگ کے دفتر سامنے احتجاج

کئی لاریوں کے ذریعہ پھلوں کو منتقل کرنے کا کام کیا جاتا ہے تاہم راتوں رات اس مارکٹ کو بند کردیاگیا ہے جس سے اس مارکٹ سے وابستہ تمام افراد کو مشکلات کا سامنا ہے۔

حیدرآباد: شہر حیدرآباد کی پھلوں کی کتہ پیٹ فروٹ مارکٹ کی منتقلی کے خلاف پھلوں کے تاجروں نے محکمہ مارکٹنگ کے دفتر کے سامنے احتجاج کیا۔کسانوں، حمالی کا کاروبارکرنے والے اور کمیشن ایجنٹس نے اس احتجاج میں حصہ لیتے ہوئے اس مارکٹ کو باٹاسنگارم منتقل کرنے کے مطالبہ کی حمایت میں نعرے بازی کی۔

انہوں نے اس موقع پر میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ کوہیڈا میں اس مارکٹ کو عارضی طورپر منتقل کیاجارہا ہے جہاں پر بنیادی سہولیات نہیں ہیں۔ اس احتجاجی پروگرام میں سی پی آئی کے ریاستی صدر چاڈاوینکٹ ریڈی،سابق رکن راجیہ سبھا عزیز پاشاہ، گڈی انارم جے اے سی کنوینر اشوک بابو نے بھی شرکت کی۔

انہوں نے اس موقع پر کہا کہ 220ایکڑ پر پھیلی مارکٹ کو باٹاسنگارم منتقل کرنے سے کسانوں،خریداری کے لئے آنے والوں،تاجروں کو شدید مشکلات کا سامنا کرناپڑسکتا ہے۔ چاڈاوینکٹ ریڈی نے کہاکہ ریاست کے علاوہ دیگرریاستوں کے مختلف مقامات سے اس مارکٹ کو پھل لائے جاتے ہیں۔

کئی لاریوں کے ذریعہ پھلوں کو منتقل کرنے کا کام کیا جاتا ہے تاہم راتوں رات اس مارکٹ کو بند کردیاگیا ہے جس سے اس مارکٹ سے وابستہ تمام افراد کو مشکلات کا سامنا ہے۔ انہوں نے کہاکہ پہلے اس مارکٹ کو کوہیڈا منتقل کرنے کی بات کی گئی تھی تاہم اچانک پھر وہاں سے باٹاسنگارم منتقلی کے اقدامات کئے جارہے ہیں۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.