کسانوں کی حمایت میں تلنگانہ کانگریس کی ریالی

۔ ریونت ریڈی نے کہا کہ مرکزی حکومت نے جن 13فصلوں کیلئے اقل ترین امدادی قیمت کا اعلان کیا تھا اُس فہرست میں دھان بھی شامل ہے۔ انہوں نے کہا کہ امدادی قیمت کے اعلان کا مطلب یہ ہے کہ مرکز فصل خرید نے کیلئے ذمہ دار ہے۔

حیدرآباد: تلنگانہ کانگریس نے مرکزی و ریاستی حکومتوں سے دھان کی خریداری کا آغاز کرنے کا مطالبہ کیا۔ آج تلنگانہ کانگریس کی جانب سے پبلک گارڈن نامپلی تا دفتر کمشنر محکمہ زراعت تک زبردست احتجاجی ریالی نکالی گئی۔ کانگریس پارٹی نے دھان کی خریداری اور کسانوں کو درپیش مسائل کا عاجلانہ حل دریافت کرنے کا مطالبہ کیا۔ احتجاجی پروگرام میں صدر ٹی پی سی سی اے ریونت ریڈی، سی ایل پی قائد ملو بھٹی وکرامارکہ، رکن پارلیمنٹ این اتم کمارریڈی، سینئر پارٹی قائدین دامودھر راج نرسمہا،دنھا سری انسوپا(سیتکا) و دیگر نے حصہ لیا۔ اس موقع پر خطاب کرتے  ہوئے صدر ٹی پی سی سی ریونت ریڈی نے کہا کہ موسم ربیع کے دوران دھان کی کاشت کیلئے کھانوں کی صورتحال قابل رحم ہے۔ مرکزی اور ریاستی حکومتیں کسانوں کے جذبات سے کھیل رہے ہیں۔

مرکز دھان کی فصل خرید نے تیار نہیں ہے تو ریاست مرکزی حکومت کو ذمہ دار ٹہرا رہا ہے۔ ریونت ریڈی نے کہا کہ مرکزی حکومت نے جن 13فصلوں کیلئے اقل ترین امدادی قیمت کا اعلان کیا تھا اُس فہرست میں دھان بھی شامل ہے۔  انہوں نے کہا کہ امدادی قیمت کے اعلان کا مطلب یہ ہے کہ مرکز فصل خرید نے کیلئے ذمہ دار ہے۔ مگر اب تک صرف11لاکھ کنٹل دھان ہی خریدا گیا4743 خریداری مراکز ہی قائم کئے گئے۔ خریدی گئی دھان کیلئے2100 کرؤر روپے جاری کیا جانا تھا مگر اب تک صرف116 کروڑ روپے ہی جاری کئے گئے۔ دوسری طرف لاکھوں ٹن دھان غیر موسمی بارش سے خراب ہورہی ہے۔

کارگذار صدر ٹی آر ایس کے ٹ ی راما راؤ کے نمائندگی والے اسمبلی حلقہ سرسلہ میں کسان خودکشی کررہے ہیں۔ رائس ملرس بھی سرقہ پر اتر آئے ہیں۔ سی ایل پی قائد ملو بھٹی وکرامارکہ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کسانوں سے دھان کی خریداری کی ذمہ داری، مرکزی وریاستی حکومتوں پر عائد ہوتی ہے۔ انہوں نے مرکزی و ریاستی حکومتوں سے جاننا چاہا کہ سابق میں دھان کی خریداری پر کوئی مسئلہ نہیں تھا پھر اب مسائل پیدا ہونے کی وجہ کیا ہے۔

 انہوں نے چیف منسٹر کی جانب سے مرکز کے خلاف مہادھرنا منظم کرنے کو حالیہ عرصہ کا سب سے بڑا مذاق اور مضحکہ خیز اقدام قرار دیا۔ سیتکا نے خطاب کرتے ہوئے چیف منسٹر کے احتجاج کو دکھاوا قرار دیا۔ انہو ں نے کہا کہ ہجاں کسانوں کو نقصان ہونے کا خدشہ ہو ریاستی حکومت کو آگے بڑھ کر دھان خریدنا چاہئے۔ مگر حکومت حل دریاست کرنے کے بجائے احتجاج کا راستہ اختیار کرتے ہوئے ذمہ داریوں سے راہ فرار اختیار کررہی ہے۔ انہوں نے ٹی آر ایس قیادت کو نئی دہلی میں احتجاج کرنے کا مشورہ دیا۔ اس احتجاجی ریالی میں ہزاروں افراد نے شرکت کی اور مرکزی و ریاستی حکومت کے خلاف نعرے بلند کئے۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.