کورونا کی نئی شکل، عوام چوکس رہیں سپرنٹنڈنٹ گاندھی ہاسپٹل راجہ راؤ کی اپیل

سپرنٹنڈنٹ گاندھی ہاسپٹل راجا راؤ نے کہاکہ جنوبی آفریقہ جہاں اومیکرون کی شروعات ہوئی ہے وہاں پتہ چلا ہے کہ یہ زیادہ شدید نہیں ہے۔وہاں پر شدید معاملات سامنے نہیں آئے ہیں اور اموات نہیں ہورہی ہیں۔

حیدرآباد: گاندھی ہاسپٹل کے سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر راجہ راو نے کہا ہے کہ کورونا کی نئی شکل اومیکرون کے پیش نظر عوام چوکس رہیں۔گاندھی ہاسپٹل کو تلنگانہ میں کورونا کی پہلی اور دوسرے لہر میں علاج کے ایک اہم مرکز میں تبدیل کیاگیا تھا۔انہوں نے کہاکہ کورونا کی کسی بھی شکل کے لئے علاج ایک ہی ہے۔کوئی بھی خصوصی یا علحدہ علاج نہیں ہے۔ کورونا کی ڈیلٹا اور اس نئی شکل میں فرق یہ ہے کہ یہ نئی شکل تیزی کے ساتھ پھیل رہی ہے۔

پہلی لہر الفاشکل کی تھی۔ دوسری لہرڈیلٹا شکل کی تھی۔الفا شکل سے زیادہ تیز،ڈیلٹا شکل تھی اور یہ مزید سنگین تھی تاہم نئی شکل اومیکرون کافی تیزی کے ساتھ پھیلنے کی صلاحیت رکھتی ہے۔انہوں نے واضح کیا کہ اس کی شدت سے متعلق کوئی تجزیہ سامنے نہیں آیا ہے۔جنوبی آفریقہ جہاں اس کی شروعات ہوئی ہے وہاں پتہ چلا ہے کہ یہ زیادہ شدید نہیں ہے۔وہاں پر شدید معاملات سامنے نہیں آئے ہیں اور اموات نہیں ہورہی ہیں۔انہوں نے نشاندہی کی کہ ایک ملک سے دوسرے ملک میں اس کی شدت الگ ہے۔دوسرے ممالک سے ہندوستانی براعظم کے مقابلہ یہاں پر اس کی شدت کے کم ہونے کا امکان ہے تاہم ہر کسی کو چوکس رہنے کی ضرورت ہے۔

عوام میں اس کے تعلق سے دورویے سامنے آرہے ہیں۔بعض لوگ اس پر کافی خوفزدہ ہیں اور بعض لوگ اس کو نظرانداز کررہے ہیں اوراس کے تعلق سے کوئی احتیاط نہیں کررہے ہیں۔اس پر فکرمند ہونا اور احتیاط نہ کرنا مناسب نہیں ہے۔انہوں نے عوام کو مشورہ دیا کہ وہ لازمی طورپر ماسک کا استعمال کریں،ٹیکے لیں،ہجوم اور غیر ضروری سفر سے گریز کیاجائے۔انہوں نے کہا کہ کورونا سے مدافعتی نظام پر اثر پڑتا ہے۔عوام کو احتیاط کے سلسلہ میں باخبر اور باشعور ہونے کی ضرورت ہے۔

ذریعہ
یواین آئی

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.