کونسل کی نشستوں پر کامیابی کیلئے ٹی آر ایس کی منصوبہ بندی

کے سی آر نے مجالس مقامی زمرہ کی تمام 6 نشستوں پر کامیابی کیلئے خصوصی حکمت عملی وضع کی ہے۔ اور اس سلسلہ میں چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کو آرڈیٹنگ اور منصوبہ کو موثر طور پر روبعمل لانے کی ذمہ داری متعلقہ اضلاع کے وزرا کو سونپی ہے۔

حیدرآباد: تلنگانہ قانون ساز کونسل کی 6نشستوں کیلئے آئندہ ماہ منعقد شدنی انتخابات میں کامیابی کیلئے اپوزیشن بی جے پی اور کانگریس کی جانب سے اختیار کردہ حکمت عملی کو مدنظر رکھتے ہوئے حکمراں جماعت ٹی آر ایس کے سربراہ کے سی آر نے مجالس مقامی زمرہ کی تمام 6 نشستوں پر کامیابی کیلئے خصوصی حکمت عملی وضع کی ہے۔ اور اس سلسلہ میں چیف منسٹر کے چندر شیکھر راؤ کو آرڈیٹنگ اور منصوبہ کو موثر طور پر روبعمل لانے کی ذمہ داری متعلقہ اضلاع کے وزرا کو سونپی ہے۔ حکمراں جماعت ٹی آر ایس کا ایقان ہے کہ اپوزیشن کانگریس اور بی جے پی کافی پیچھے ہے۔ اس تناظر میں متعلقہ وزراء کو دونوں جماعتوں کی طاقت اور ان کے استحکام کا بخوبی اندازہ ہے۔

 ضلع کے وزراء، پارٹی کے ارکان اسمبلی، کونسل اور پارلیمنٹ کے علاوہ مشترکہ اضلاع کے حلقہ کے انچارج جس سے جہاں الیکشن منعقد شدنی ہیں، ملاقات کرچکے ہیں۔ اور انہیں پارٹی کی انتخابی حکمت عملی سے واقف کرا رہے ہیں۔ ارکان اسمبلی پارٹی کے زیڈ پی ٹی سیز، ایم پی ٹی سیز، ارکان بلدیہ اور کارپوریٹرس کے اجلاس منعقد کررہے ہیں۔ تاکہ ان سے مشاورت کے ذریعہ6 ایم ایل سی نشستوں پر قبضہ کیا جاسکے۔تمام اضلاع میں ٹی آر ایس کی غالب اکثریت ہے۔ ضلع  نلگنڈہ میں وزیر برقی جگدیش ریڈی نے پارٹی کے ارکان اسمبلی، ایم ایل سی اور راجیہ سبھا کا اجلاس منعقد کیا۔

کھمم سے وزیر ٹرانسپورٹ پی اجئے کمار واحد ٹی آرایس امیدوار تھے جنہوں نے اسمبلی الیکشن میں کامیابی حاصل کی تھی جبکہ دیگر7 ارکان اسمبلی دیگر جماعتوں سے ٹی آر ایس میں شامل ہوئے ہیں اس طرح ضلع میں اب ٹی آر ایس کے ارکان اسمبلی کی تعداد8 ہوگئی ہے۔ ضلع کریم نگر میں مجالس مقامی زمرہ کی دونشستوں کیلئے انتخابات منعقد شدنی ہیں۔ اس ضلع سے ٹی آر ایس کے امیدواروں کو سخت مقابلہ کا سامنا ہے۔ جہاں جملہ10 امیدوار میدان میں ہیں۔ ٹی آر ایس نے پہلے ہی اپنے ایم پی ٹی سیز کو حیدرآباد کے مضافات میں ایک فارم ہاوز منتقل کردیا ہے جبکہ کارپوریٹرس اور کونسلرس، دسمبر کے ابتداء میں بنگلورو منتقل ہوں گے۔

 میدک میں بی جے پی میں شامل ہونے والے ایک کونسلر میدان میں ہے۔ تاہم وزیر فینانس ہریش راؤ نے ضلع کے رائے دہندوں سے ربط پیدا کرنا شروع کردیا ہے۔ کریم نگر میں صدر ریاستی بی جے پی بنڈی سنجے، رکن اسمبلی ای راجندر اور کانگریس کے رکن اسمبلی ڈی سریدھر بابو نے ٹی آر ایس کے ایک امیدوار کو شکست دینے کی تیار کرلی ہے۔ میدک میں رکن اسمبلی جگا ریڈی نے اپنی بیوی نرملا کو میدان میں اتارا ہے۔ بی جے پی کے دوباک کے رکن اسمبلی رگھونندن راؤ، دوباک کے کونسلر ایم ملا ریڈی کی تائید کررہے ہیں۔

بتایا جاتا ہے کہ ضلع عادل آباد میں بی جے پی سوئم بابو، اور رکن اسمبلی ای راجندر، آزاد امیدوارہ پشپا رانی کی پس پردہ تائید کررہے ہیں۔ نلگنڈہ میں کانگریس ایم پی کے وینکٹ ریڈی بھی میدان میں اتر چکے ہیں۔ جبکہ کھمم ضلع میں سی ایل بی قائد ملو بھٹی وکرامارکہ بھی کانگریس امیدوار کے حق میں ووٹ مانگنے کیلئے متحرک ہوچکے ہیں۔

ذریعہ
منصف نیوز بیورو

تبصرہ کریں

Back to top button

Adblocker Detected

Please turn off your Adblocker to continue using our service.